علیحدگی پسند کشمیری تنظیموں کی کال پر کشمیر میں ہڑتال سے عام زندگی درہم برہم

سری نگر: نقل مکانی کرنے والے کشمیری پنڈتوں کے لیے سینک کالونیاں بنانے اور ریاست میں نئی صنعتی پالیسی لانے کے مجوزہ منصوبوں کے خلاف احتجاج میں علیحدگی پسند تنظیموں حریت کانفرنس (گیلانی) اور جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) کی کال پر منائے جانے والے بند سے وادی کشمیر میں عام زندگی بری طرح متاثر رہی۔
سرکاری ذرائع کے مطابق جموں و کشمیر کی موسم گرما کے دارالخلافہ سری نگر میں دکانیں ، تجارتی و صنعتی ادارےاور پیٹرول پمپ بند رہے جبکہ سرکاری دفاتر اور بینک حسب معمول کھلے ضرور لیکن ان میں حاضری نہایت کم رہی۔
ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ سرکاری ٹرانسپورٹ سڑکوں سے غائب تھا جبکہ پرائیویٹ کاریں ،کیبس اور آٹو رکشا معمول کے مطابق سڑکوں پر چلتے دکھائی دیے۔وادی میں پرائیویٹ اسکول بھی ہڑتال کے باعث بند رہے۔
وادی کے دیگر مقامات سے بھی ہڑتال کی خبریں آرہی ہیں۔اس کال کے بعد حریت کانفرنس کے سخت گیر لیڈر سید علی شاہ گیلانی کی خانہ نظر بندی جاری رہی اور دوسری طرف اعتدال پسند حریت چیرمین میر واعظ عمر فاروق کو بدھ کے روز ہی خانہ نظر بند کر دیا گیا تھا۔جے کے ایل ایف چیرمین یٰسین ملک کو بھی کل ہی ابی گذار سے گرفتار کر لیا گیا تھا۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: strike disrupts normal life in valley in Urdu | In Category: کشمیر  ( kashmir ) Urdu News

Leave a Reply