سیشن عدالت نے مسرت عالم بٹ کی ضمانت پر رہائی روک دی

سری نگر: شمالی ضلع بانڈی پورہ کی سیشن کورٹ نے بدھ کے روز حریت کانفرنس (گ) سینئر لیڈر مسرت عالم بٹ کی رہائی کا حکم نامہ 27 فروری تک معطل کردیا۔ مسرت عالم جو پولیس تھانہ سمبل میں مقید ہیں، کی چیف جوڈیشل مجسٹریٹ نے 2015 ء کے ایک معاملہ میں ضمانت منظور کی تھی۔ تاہم ریاستی حکومت نے اس رہائی کے حکم کے خلاف بانڈی پورہ کی سیشن کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا جس پر سیشن کورٹ نے آج سی جی ایم کے حکم نامے مذکورہ حکم نامے کو 27 فروری تک معطل رکھنے کا فیصلہ سنادیا۔
مسرت عالم پر گزشتہ اڑھائی دہائیوں کے دوران 30 سے زائد مرتبہ پی ایس اے لگایاجاچکا ہے۔ پی ایس اے کے تحت سیاسی قیدیوں کو کم از کم تین ماہ تک جیل میں رکھا جاتا ہے جبکہ عسکریت پسندی سے متعلق واقعات میں ملوث پائے جانے والے افراد کو اس قانون کے تحت کم از کم چھ ماہ تک جیل میں رکھا جاتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ 15 اپریل 2015 ءکو حریت (گ) نے اپنے چیرمین سید علی گیلانی کی نئی دہلی سے سری نگر واپسی کے موقع پر ایک استقبالیہ ریلی منعقد کی تھی جس کے شرکاء نے نہ صرف پاکستان کے حق میں نعرے بازی کی تھی بلکہ پاکستانی جھنڈا بھی لہرایا تھا۔

Title: session court of bandi pura suspended musarrat alam release order till 27 february | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply