امرناتھ یاترا کے دوران ڈرون کیمرے یاتریوں اور عام شہریوں کی خصوصی توجہ کا مرکز

سری نگر: جنوبی کشمیر میں سالانہ امرناتھ یاترا کے سلسلے میں سطح سمندر سے 13 ہزار 500 فٹ بلندی پر واقع مقدس غارمیں حاضری دینے والے یاتریوں کو تحفظ کا احساس دلانے کے لئے امسال پہلی مرتبہ ڈرون کیمروں کی مدد لی جارہی ہے، جو جموں کے بھگوتی نگر علاقہ میں واقع بنیادی کیمپ میں یاتروں اور عام شہریوں کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں۔
یہ ڈرون کیمرے چوبیس گھنٹے بنیادی کیمپ کے اوپرفضا میں اردگرد کی زمینی و فضائی صورتحال کی نگرانی کے لئے استعمال کئے جارہے ہیں۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’مرکز کی ہدایات پر بھگوتی نگر یاتری نواس کے ارد گرد ہر نقل وحرکت پر نظر رکھنے کے لئے ڈرون کیمرے استعمال میں لائے گئے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ڈرون کیمرے 20 سے 25 منٹ تک چلنے والی بیٹری کی مدد سے کام کررہے ہیں۔ انہوں نے بتایا ’اعلیٰ فریکوئنسی والے یہ ڈرون کیمرے دو سے تین کلو میٹر کی دوری پررونما ہونے والی سرگرمیوں کی عکس کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں‘۔
سرکاری ذرائع نے بتایا کہ اِن ڈروں کیمروں کو آپریٹ کرنے والے اہلکار اِن سیکورٹی آلات سے چوبیس گھنٹے نگرانی کا کام لینے کے لئے اِن کی بیٹریاں طے شدہ وقت کے بعد تبدیل کرتے رہتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ یاتری نواس کے علاوہ پوتر گپھا کی طرف جانے والے مختصر بال تل اور روایتی پہلگام راستوں پر بھی ڈرون کیمروں کی مدد سے کسی بھی مشتبہ نقل وحرکت پر نظر رکھی جارہی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ امرناتھ گپھا میں بھی عقیدتمندوں کی حاضری کی ڈرون کیمروں کے ذریعے مانیٹرنگ کی جارہی ہے۔
انہوں نے بتایا کہ بیس کیمپوں اور یاترا راستوں کے اوپر فضا میں دن رات چکر کاٹنے میں مصروف یہ ڈرون کیمرے تصویریں لیکر کنٹرول روم بھیجتے رہتے ہیں جن کا وہاں جائزہ لیا جاتا ہے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا ’جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کے علاوہ یاتریوں کی حفاظت کے لئے مقدس گپھا تک چار دائروں والی سیکورٹی تعینات کی گئی ہے‘۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ پہلی مرتبہ جموں سری نگر قومی شاہراہ پر یاتریوں کے لئے قائم کئے گئے لنگرس میں سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں۔
تاہم بھگوتی نگر یاتری نواسن کے اوپر فضا میں چکر کاٹنے والے ڈرون کیمرے یاتریوں اور عام شہریوں کی توجہ کے مرکز بنے ہوئے ہیں، جو عکس بندی کے اِن آلات کی اپنے موبائیل فونوں کے ذریعے فوٹو و ویڈیو گرافی کرتے ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ کشمیر میں گذشتہ کچھ ہفتوں سے جنگجویانہ سرگرمیوں میں آنے والی تیزی اور خاص طور پر کشمیر شاہراہ پر گذشتہ ماہ کی 3 اور 25 تاریخ کو بالترتیب بجبہاڑہ میں بی ایس ایف اور پانپور میں سی آر پی ایف کے قافلوں پر ہونے والے جنگجویانہ حملوں کے پیش نظر امرناتھ یاترا کے پرامن اور خوشگوار ماحول میں انعقاد کو یقینی بنانے کے لئے امسال جموں کے بھگوتی نگر میں واقع یاتری نواسن بیس کیمپ سے لیکر امرناتھ گھپا تک فقیدالمثال حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔
سیکورٹی ذرائع کے مطابق یاتریوں کو جموں وکشمیر کے داخلی پوائنٹ لکھن پور سے لے کر امرناتھ گپھا اور واپسی پر اسی طرح لکھن پور تک معقول سیکورٹی کور فراہم کیا جارہا ہے۔سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ اگرچہ امرناتھ یاترا کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے تاہم اس کے باوجودیاترا کی خیر و عافیت کے ساتھ تکمیل کے لئے وادی خاص طور پر یاترا روٹوں پر چار دائروں والی سیکورٹی کا بندوبست کیا گیا ہے جبکہ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لئے اینٹی فدائین اسکواڈ کو تیار حالت میں رکھا گیا ہے۔
خیال رہے کہ جنگجو تنظیم حزب المجاہدین کے نوجوان کمانڈر برہان وانی نے گذشتہ ماہ کے اوائل میں اپنے ایک ویڈیو بیان میں کہا کہ کشمیر آنے والے امرناتھ یاتریوں کو کسی بھی صورت میں نقصان نہیں پہنچایا جائے گا۔ دریں اثنا وادی میں جنگجویانہ سرگرمیوں میں آنے والے تیزی کے تناظر میں امرناتھ یاترا کے پرامن اور خوشگوار ماحول میں انعقاد کو یقینی بنانے کے لئے کئے گئے فقیدالمثال سیکورٹی انتظامات کے درمیان یہ بات ایک بار پھر سامنے آگئی ہے کہ بیشتر یاتری بال تل اور ننون پہل گام یاترا بیس کیمپوں تک کا سفر بغیر کسی سیکورٹی کور کے طے کرتے ہیں۔
ذرائع نے بتایا کہ اگرچہ امرناتھ یاتریوں کو سیکورٹی سے متعلق رہنما خطوط کے مطابق پہلے بھگوتی نگر بیس کیمپ پہنچنا اور پھر وہاں سے قافلے کی صورت میں کشمیر کی طرف بڑھنا ہوتا ہے، لیکن قریب 80 فیصد یاتری جموں بیس کیمپ میں ٹھہرنے کے بجائے براہ راست اور بغیر کسی سیکورٹی کور کے بال تل اور ننون پہل گام پہنچ جاتے ہیں۔ اڑتالیس (48) دنوں پر محیط امرناتھ یاترا امسال 18 اگست کو رکھشا بندھن کے تہوار کے موقع پر خصوصی پوجا کے ساتھ اختتام پذیر ہوگی۔(یو این آئی )

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Security forces use hi tech drone cameras to monitor base camp of amaranth yatra in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply