تشدد کی لہر کو روکنے کیلئے کشمیری نوجوان احتجاجیوں پر فائرنگ کا سلسلہ بند کرنا ہوگا: عمر عبداللہ

سری نگر: جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ سے کہاہے کہ جب تک سیکورٹی فورسز صبر و تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے احتجاجیوں کو ہلاک کرنا بند نہیں کریں گی تب تک وادی میں جاری تشدد کی لہر کا رکنا مشکل ہے۔
انہوں نے کہا ہے کہ صرف اور صرف غیرمہلک ہتھیاروں کے استعمال سے ہی وادی کے حالات کو معمول پر لایا جاسکتا ہے۔ مسٹر عبداللہ نے مطالبہ کیا ہے کہ 9 جولائی سے زخمی ہوئے افراد کو معقول طبی سہولیت فراہم کی جانی چاہیے۔ انہوں نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ایک ٹویٹ میں کہا ’مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ جی نے آج میرے ساتھ بات کی۔ میں نے انہیں بتادیا کہ جب تک سیکورٹی فورسز صبر و تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے احتجاجیوں کو ہلاک کرنا بند نہیں کریں گے تب تک وادی میں جاری تشدد کی لہر کا رکنا مشکل ہے۔
میں نے ا±ن سے کہا کہ صرف اور صرف غیرمہلک ہتھیاروں کے استعمال سے ہی وادی کے حالات کو معمول پر لایا جاسکتا ہے‘۔ عمر عبداللہ نے مرکزی وزیر داخلہ کو مزید بتایا ہے کہ نیشنل کانفرنس امن وامان کی بحالی کے لئے اپنا بھرپور تعاون پیش کرے گی۔
تاہم ساتھ ہی یہ بھی کہا ہے کہ امن وامان کی بحالی کی ذمہ داری ریاستی اور مرکزی سرکاروں پر عائد ہوتی ہے۔ انہوں نے اپنی ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ اسپتالوں میں زخمیوں کو معقول طبی سہولیت فراہم کی جانی چاہیے۔ ریاستی کابینہ نے کل قومی دھارے میں شامل سیاسی جماعتوں اور علیحدگی پسند تنظیموں بشمول حریت کانفرنس کے دونوں دھڑوں کے علاوہ والدین سے اپیل کی تھی کہ وہ وادی میں امن وامان بحال کرنے اور قیمتی جانیں بچانے کے لئے ریاستی حکومت کی مدد کرے۔
جس کے بعد عمر عبداللہ نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ ا±ن کی جماعت (نیشنل کانفرنس) ریاست میں امن وامان کی بحالی میں اپنا رول ادا کرنے کے لئے تیار ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Security forces must stop killing protesters says omar abdullah in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply