کشمیر کا مسئلہ ریفرنڈم یا سہ فریقی مذاکرات سے ہی حل ہو سکتا ہے: میرواعظ عمر فاروق

سری نگر: حریت کانفرنس (ع) کے چیئرمین میرواعظ مولوی عمر فاروق نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کا سب سے آسان اور جمہوری طریقہ یہی کہ ایک آزادانہ ریفرنڈم کے ذریعے یہاں کے عوام سے ان کی رائے پوچھی جائے یامسئلہ سے وابستہ سبھی فریقین جموں کشمیر کے عوام ، ہندوستان اور پاکستان کے مابین ایک بامعنی مذاکراتی عمل اس مسئلہ کے حل کامتبادل ہوسکتاہے۔ میرواعظ نے ان خیالات کا اظہار امریکہ کی معروف ہاورڈ یونیورسٹی کے کنیڈی اسکول فار بزنس اینڈ گورنمنٹ میں منعقدہ دو روزہ کانفرنس سے بذریعہ ویڈیو تقریر کیا ہے۔
حریت کانفرنس کی جانب سے ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب پر دستیاب کرائی گئی مذکورہ تقریر میں میرواعظ نے مسئلہ کشمیر کی اہمیت کو اس کے تاریخی تناظر میں پیش کیا ہے۔ حریت کے ایک ترجمان نے کہا ’ حکومت ہند کی جانب سے سفری دستاویزات فراہم نہ کئے جانے کی وجہ سے میرواعظ مذکورہ کانفرنس میں ذاتی طور شرکت نہ کر سکے‘۔ حریت چیئرمین نے اپنی ویڈیو تقریر میں کہا ہے کہ کشمیری عوام موجودہ دور میں جس درد اور کرب کی صورتحال سے گذرہے ہیں وہ صرف اس وجہ سے ہے کہ یہاں کی عوام پر ایک ایسی جابر حکومت مسلط ہے جو یہاں کے عوام سے بین الاقوامی سطح پر کئے گئے وعدوں سے نہ صرف مکررہی ہے بلکہ ظلم و جبر کی بنیاد پر یہاں کے عوام کی آواز کو دبانے کے لئے ہر غیر جمہوری اور غیر انسانی ہتھکنڈا بروئے کار لارہی ہے۔
میرواعظ نے کہا ہے کہ یہ اسی صورتحال کا نتیجہ ہے کہ پوری جنوبی ایشاء پر جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں اور پورا خطہ غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہے جس کا خمیازہ خطے کے عوام کے ساتھ ساتھ ہندوستان اور پاکستان کے فوجی بھی بھگت رہے ہیں۔ حریت ترجمان نے کہا کہ مذکور ہ کانفرنس جس میں ممتاز دانشوروں اور طلبا کی بڑی تعداد موجود تھی میں میرواعظ کی تقریر کو بڑی توجہ سے سنا گیا۔

Title: resolve kashmir conflict through promised referendum mirwaiz | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply