جموں وکشمیر ہائی کورٹ نے عوامی سلامتی ایکٹ کے تحت گرفتار کمسنوں کی فوری رہائی کا حکم جاری کر دیا

سری نگر:جموں وکشمیر ہائی کورٹ نے ان دو کمسنوں کی حراست منسوخ کردی ہے جنہیں وادی میں حالیہ شورش کے دوران عوامی سلامتی ایکٹ کے تحت گرفتار کیا گیا تھا۔ جسٹس علی محمد ماگرے کی یک رکنی بنچ نے یہ کہتے ہوئے کسی کمسن کو اس ایکٹ کے تحت حراست میں نہیں رکھا جاسکتا، حکومت کو ہدایت دی کہ دونوں کمسنوں کو فوری طور پر رہا کیا جائے۔
پولس نے شورش کے دوران مبینہ طور پر تشدد میں حصہ لینے پر وحید احمد گوجری اور محسن حامد ملاکو گرفتار کیا تھا۔ بارہمولہ کے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے بعدازاں محسن کو عوامی سلامتی ایکٹ کے تحت گرفتار کیا اور کپواڑہ کے ڈی ایم نے وحید کے خلاف بھی ایسے ہی احکامات منظور کئے۔
وحید اور محسن نے اپنے وکیلوں بالترتیب میاں عبدالقیوم اور جی این شاہین کے ذریعہ اپنی حراستوں کو چیلنج کیا۔ان کے وکیلوں نے یہ دلیل دی کہ چونکہ متعلقہ ایکٹ کے تحت کمسنوں کو حراست میں نہیں لیا جاسکتا۔ لہذا انہیں رہا کیا جائے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Psa detention of minors not permissible jkhc in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply