کشمیر میں نماز جمعہ کے بعدمظاہرین اور سیکورٹی فورسز میں جھڑپیں، متعدد زخمی

سری نگر: وادیکشمیر میں آج نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد متعدد مقامات پر احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں ہوئیں جن کے دوران سیکورٹی فورسز نے پتھراؤ کر رہے مجمعکو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔
وادی کے جن مقامات سے جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئیں ان میں سری نگر، سوپور، پل ہالن، بج بہاڑہ ، پلوامہ اور ترال شامل ہیں۔ ان جھڑپوں میں متعدد افرادبشمول سیکورٹی فورس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔ خیال رہے کہ کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے چاڈورہ بڈگام میں گذشتہ روز سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں 3شہریوں کی ہلاکت بدھ 29مارچ کو وادی میں ہڑتال کرنے اور جمعہ 31مارچ کو نماز کے بعد پرامن مظاہرے کرنے کی کال دی تھی۔
اطلاعات کے مطابق دربگ چاڈورہ ہلاکتوں کے خلاف وسطی ضلع بڈگام کے متعدد علاقوں میں جمعہ کو بھی ان ہلاکتوں کے سوگ میںہڑتال رہی۔ اس کے علاوہ دربگ میں مسلح تصادم کے دوران مارے گئے جنگجو کے آبائی علاقہ یاری پورہ کولگام میں بھی مکمل ہڑتال رہی۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Protesters clash with security forces in kashmir valley in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply