وزیر اعظم اسپیشل ا سکالر شپ ا سکیم کے تحت3373 کشمیری طلباکا بیرون ریاست کالجوں میں داخلہ

سری نگر:ریاست جموں وکشمیر سے تعلق رکھنے والے3 ہزار سے زاید طالب علموں کا داخلہ وزیر اعظم سپیشل سکالر شِپ سکیم( پی ایم ایس ایس ایس) کے تحت بیرون ریاست کے مختلف پیشہ وارانہ اور دیگر کالجوں میں کیا گیا۔ یہ جانکاری وزیر تعلیم نعیم اختر کو امر سنگھ کالج سرینگر کے دورے کے دوران دی گئی جہاں ای ایم ایس ایس ایس کی کونسلنگ کا پہلا مرحلہ اختتام کو پہنچا۔
وزیر کو بتایا گیا کہ انجینئرنگ کی جملہ 2401 نشستوں میں سے2372 پر کی گئیں جبکہ جنرل کورسز کی1089 سیٹوں میں سے842 بدھ کی شام تک پر کی گئیں۔ انہیں مزید بتایا گیا کہ پی ایم ایس ایس ایس کے تحت میڈیکل کورسوں میں 159 نشستیں پر کی جائیں گی جس سے کل نشستوں کی تعداد3373 ہوگی۔یہ تعداد پی ایم ایس ایس ایس کے تحت آج تک کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ گذشتہ برس پی ایم ایس ایس ایس کے تحت صرف900 طالب علموں کو بیرون ریاست کے کالجوں میں داخلہ دیا گیا تھا۔26 جولائی2016 کو پی ایم ایس ایس ایس کی کونسلنگ امر سنگھ کالج سرینگر اور زنانہ کالج گاندھی نگر میں بیک وقت شروع کی گئی تھی۔ وزیر نے کہا کہ جموں وکشمیر سے6027 طالب علموں نے پی ایم ایس ایس ایس کے تحت داخلہ لینے کے لئے رجسٹریشن کی تھی۔
انہوں نے کہا” یہ ایک قابلِ مسرت بات ہے کی بیشتر طالب علموں نے ملک کے معروف تعلیمی اداروں میں داخلہ حاصل کیا ہے جن میں دہلی کالج آف انجنیئرنگ، چنڈی گڑھ کالج آف انجنئیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، سینٹ سٹیفنز کالج دہلی، انسٹی چیوٹ آف انجنیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی روہتک، لیڈی سری رام کالج دہلی، برلہ انسٹی چیوٹ آف ٹیکنالوجی جھار کھنڈ، راجیو گاندھی گورنمنٹ انجنئیرنگ کالج ہماچل پردیش، نیتا جی سبھاش انسٹی چیوٹ آف ٹیکنالوجی دہلی اور ڈی اے وی کالج ہریانہ شامل ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاست کے محکمہ تعلیم اور اے آئی سی ٹی ای نے پی ایم ایس ایس ایس کی کونسلنگ کے لئے معقول انتظامات کئے تھے۔
انہوں نے کہا کہ اس عمل میں درمیانہ داروں کا رول ختم کیا گیا ہے جنہوں نے ماضی میں طالب علموں کو دھوکہ دیا ہے۔ احتجاج کر رہے ان طالب علموں جنہوں نے 2014-15 میں 10+2 کا امتحان پاس کیا ہے ، وزیر تعلیم نے کہا کہ حکومت اس بات کو یقینی بنائے گی کہ کوئی نشست خالی نہ رہے اور سی ای ٹی اور این ای ای ٹی کے نتایج آنے کے بعد کونسلنگ کا دوسرا مرحلہ شروع کیا جائے گا۔ وزیر نے کہا کہ رواں مالی سال کے لئے جموں کشمیر کے طالب علموں کی خاطر اس سکیم کے تحت 75 کروڑ روپے کی رقم دستیاب رکھی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنرل کورسز کیلئے اس سکیم کے تحت 30 ہزار روپے سالانہ وظیفہ کے طور دئیے جائیں گے جبکہ انجینئرنگ کیلئے 1.25 لاکھ روپے اور میڈیکل /ڈینٹل کورسز کیلئے 3 لاکھ روپے سالانہ بطور وظیفہ ادا کئے جائیں گے۔
انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ ہر ایک طالب علم کو دیگر اخراجات کیلئے ایک لاکھ روپے تک سالانہ دئیے جائیں گے۔ وزیر نے کہا کہ پی ایم ایس ایس ایس کے تحت جن طالب علموں کو داخلہ ملا ہے ان کی ٹیوشن فیس ان کے متعلقہ کالجوں کو اے آئی سی ٹی ای کے ذریعے براہ راست ادا کی جائے گی جبکہ دیگر اخراجات کی رقم جس میں ہوسٹل فیس اور کتابوں وغیرہ کی قیمت شامل ہے طالب علم کے کھاتے میں ڈی بی ٹی کے تحت جمع کی جائے گی۔ امن و قانون کی صورتحال بگڑ جانے کے باوجود پی ایم ایس ایس ایس کی کونسلنگ کے احسن انعقاد کیلئے وزیر تعلیم نے اے آئی سی ٹی ای ، محکمہ تعلیم ، مختلف کالجوں کے سربراہوں ، ضلع ترقیاتی کمشنروں اور ضلع پولیس سربراہوں کے تئیں تشکر کا اظہار کیا۔
وزیر تعلیم نے اے آئی سی ٹی ای کے چئیر مین پروفیسر انل سہرسا بدھی اور یو جی سی کے جوائنٹ سیکرٹری میر نثار کا بھی شکریہ ادا کیا جو پی ایم ایس ایس ایس کے انتظامات کا جائیزہ لینے کیلئے دہلی سے سرینگر آئے تھے۔ واضح رہے کہ جموں کی پلک گپتا پہلی طالبہ تھیں جنہیں پی ایم ایس ایس ایس کے تحت لیڈی سری رام کالج میں داخلہ ملا جبکہ پلوامہ کے محمد صہیب کا داخلہ دہلی کے معروف سینٹ ا سٹیفنس کالج میں ہوا۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Prime minister scholarship scheme 3373 kashmiri students secure admission in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply