لداخ میں 10ہزار پانچ سو سال قدیم رہائشی علاقہ دریافت

نئی دہلی: ہندوستانی محکمہ آثار قدیمہ (اے ایس آئی) نے جموں و کشمیر کے لداخ خطے میں قراقرم درہ کے راستے پر 8500 قبل مسیح یعنی 10500 سالہ ایک رہائشی مقام کی دریافت کی ہے۔
اے ایس آئی کے جوائنٹ ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ایس بی او ٹی اے کو سال16۔ 2015 کے دوران خوبصورت نبرا وادی کی تلاش کرتے ہوئے ساسیر سیریز کی طرف بڑھتے وقت گھماؤدار سڑک کے دونوں جانب پہاڑی اور وادی کا پتہ چلا۔ قریب 22 کلومیٹر کا سفر طے کرنے کے بعد انہوں نے سڑک کی تعمیر کی وجہ سے جلے ہوئے باقیات کی کچھ پرتیں دیکھی اور پھر وہاں رک کر اس علاقے کا معائنہ کیا۔
انہوں نے بتایا کہ وہ ایک سپاٹ علاقہ ہے جس کی ایک چوٹی برف سے ڈھکی ہے اور بنجر زمین پر چاروں طرف چٹانیں ہیں اور ایک گہری تنگ کھائی بھی ہے جو رہنے کے لئے ایک مناسب جگہ ہے۔
ثقافت کی وزارت نے ایک بیان میں بتایا کہ اس مقام سے جمع کئے گئے چارکول کے ایک نمونے کو امریکہ کی ایک لیبارٹری میں بھیجا گیا ہے تاکہ قدیم جگہ کے زمانے کے حتمی پتہ چل سکے۔ یہ نمونہ 8500 قبل مسیح تک کا ہو سکتا ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Over 10500 years old camping site discovered by asi in ladakh in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply