محبوبہ حکومت کشمیر میں ہلاکتوں کو روزمرہ کا معمول سمجھ بیٹھی ہے: عمر عبداللہ

سری نگر: جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی اور مرکزمیں مودی سرکار کو تنقید پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ محترمہ مفتی اب بھی اس طرح برتاؤ کرنا چاہتی ہیں جیسے کشمیر میں ہونے والی شہری ہلاکتیں روز مرہ کا معمول ہے، لیکن مرکز میں این ڈی اے سرکار صورتحال سے غافل کیوں ہے۔
انہوں نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ’گذشتہ رات مزید دو احتجاجیوں کو ہلاک کیا گیا۔ وزیر اعلیٰ اب بھی اس طرح برتاؤکرنا چاہتی ہیں جیسے کشمیر میں جو کچھ ہورہا ہے وہ روزمرہ کا معمول ہے، لیکن مرکزی سرکاری صورتحال سے غافل کیوں ہے‘۔
وادی میں 8 جولائی کو حزب المجاہدین کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد بھڑک اٹھنے والی احتجاجی لہر میں تاحال 54 افراد ہلاک جبکہ 5 ہزار دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک شدگان میں 3 خواتین اور ایک پولیس اہلکار بھی شامل ہے۔
بیشتر افراد سیکورٹی فورسز کی مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کی وجہ سے ہلاک ہوئے ہیں۔ تین خواتین میں سے 18 سالہ جواں سال لڑکی یاسمینہ 10 جولائی کو ضلع کولگام کے دمہال ہانجی پورہ جبکہ 55 سالہ سیدہ بیگم اور 32 سالہ نیلوفر اختر18 جولائی کو ضلع کولگام کے قاضی گنڈ میں سیکورٹی فورسز کی مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کے نتیجے میں ہلاک ہوئیں۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Omar abdullah hits out at central and mehbooba govt in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply