سری نگر و اننت ناگ ضمنی انتخابات کے لیے سیکورٹی فورسز کا تعلیمی اداروں پر قبضہ

سری نگر: وادی کشمیر کی دو پارلیمانی نشستوں سری نگر اور اننت ناگ کے لئے بالترتیب 9 اور 12 اپریل کو ہونے والے ضمنی انتخابات کے سلسلے میں جنوبی و سطی کشمیر میں قریب ایک درجن تعلیمی اداروںکوسیکورٹی فورسز اور انتخابی عملے کے قیام و طعام کے لیے لے لیا گیا ہے۔ پارلیمانی ضمنی انتخابات کے سلسلے میں بیرون وادی سے بلائی گئی اضافی فورسز کی جانب سے تعلیمی اداروں میں ڈیرہ جمانے کے سبب ان میں تعلیمی سرگرمیاں متاثر ہوکر رہ گئی ہیں۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ ریاستی وزیر تعلیم سید محمد الطاف بخاری نے گذشتہ ہفتے یہ کہتے ہوئے اساتذہ کو تمام دیگر ذمہ داریوں بشمول انتخابی ڈیوٹی سے فارغ کردینے کا اعلان کیا تھا کہ تعلیمی سرگرمیوں میں خلل نہیں پڑنے دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا تھا کہ اساتذہ کو اضافی ذمہ داریوں سے فارغ کردینے اور مستثنیٰ قرار دیے جانے کا اعلان ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی ہدایات پر کیا جارہا ہے۔ تاہم جہاں اس اعلان کے باوجود مبینہ طور پر 200 سے زائد اساتذہ کو الیکشن ڈیوٹی پر لگادیا گیا ہے، وہیں اب سیکورٹی فورسز اور انتخابی عملے کی جانب سے تعلیمی اداروں میں اپنا ڈیرہ جمانے کا سلسلہ بھی شروع ہوگیا ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Occupation of schools by para military forces grows in poll bound kashmir in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply