علیحدگی پسند لیڈروں کی گرفتاری کے خلاف کشمیر میں ہڑتال سے عام زندگی درہم برہم

سری نگر: قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کے ہاتھوں 7 علیحدگی پسند لیڈران کی گرفتاری کے خلاف وادی کشمیر میں منگل کو جزوی ہڑتال رہی۔ اس دوران ریلوے حکام کی جانب سے جموں خطہ کے بانہال اور شمالی کشمیر کے بارہمولہ کے درمیان چلنے والی ریل خدمات احتیاطی اقدامات کے طور پر معطل رکھی گئیں۔ اس کے علاوہ ضلع انتظامیہ سری نگر کے احکامات پر پائین شہر کے پانچ تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ رہیں۔ خیال رہے کہ کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے این آئی اے کی جانب سے علیحدگی پسند لیڈران کی گرفتاری کے خلاف آج کشمیر میں مکمل ہڑتال کی کال دی تھی۔
این آئی اے نے پاکستان سے ہونے والی مبینہ ٹیرر فنڈنگ کی جانچ کے سلسلے میں منگل کے روز 7 علیحدگی پسند لیڈران کو گرفتار کرکے نئی دہلی منتقل کیا۔ گرفتار شدگان میں حریت (گ) ترجمان ایاز اکبر، مسٹر گیلانی کے داماد الطاف احمد شاہ عرف الطاف فنتوش ، راجہ معراج الدین کلوال(حریت گ ضلع صدر) ،سینئر حریت گ لیڈر پیر سیف اللہ، حریت کانفرنس (ع) ترجمان شاہد الاسلام، نیشنل فرنٹ چیئرمین نعیم احمد خان اور فاروق احمد ڈار عرف بٹہ کراٹے شامل ہیں۔ ہڑتال کی اپیل پر جہاں سری نگر کے سیول لائنز میں بیشتر دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے، وہیں سڑکوں پر نجی اور مسافروں گاڑیوں کی ایک بڑی تعداد چلتی ہوئی نظر آئیں۔ اگرچہ بیشتر تعلیمی ادارے بند رہے، تاہم سرکاری دفاتر اور بینکوں میں کام کاج معمول کے مطابق جاری رہا۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Normal life affected in kashmir due to strike in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply