کشمیر میں خواتین کی چوٹی کاٹنے کے واقعات کے خلاف ہڑتال

سری نگر: (یو ا ین آئی) جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کے مختلف حصوں میں منگل کے روز خواتین کی چوٹی کاٹنے کے پراسرار واقعات کے خلاف ہڑتال کی گئی۔ ہڑتال کے دوران چند ایک مقامات پر لوگوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاج کیا اور سول و پولیس انتظامیہ پر قصورواروں کا پتہ لگانے میں ناکام ثابت ہونے کا الزام عائد کیا۔ احتجاجیوں نے اس کے علاوہ فوج پر قصورواروں کو بچانے کا الزام عائد کردیا۔ ایک رپورٹ کے مطابق ضلع کولگام میں رواں ماہ کے دوران خواتین کی چوٹی کاٹنے کے ایک درجن واقعات پیش آئے ہیں۔
چوٹی کاٹنے کے ان پراسرار واقعات کے خلاف ضلع کے مختلف حصوں میں منگل کو بطور احتجاج دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت جزوی طور پر معطل رہی۔ ضلع کے مالون نامی گاؤں کے رہائشیوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے گذشتہ رات خواتین کی چوٹی کاٹنے والے دو افراد کو دبوچ لیا، لیکن نذدیکی فوجی کیمپ سے فوجی اہلکاروں نے موقع پر پہنچ کر انہیں اپنی تحویل میں لینے کے بعد رہا کیا۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق مالون میں منگل کی صبح لوگوں نے سڑکوں پر آکر چوٹی کاٹنے کے پراسرار واقعات ، ان میں ملوث افراد اور فوج کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Kulgam shuts against 5 braid chopping incidents in just 24 hrs in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply