لشکر طیبہ میں شامل ہونے والا کشمیری فٹبالر ماجد خان گھر واپس آگیا

سری نگر: گھر سے بھاگ کر دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ میں شمولیت اختیار کرنے کے بعد سوشل میڈیا پر رائفل کے ساتھ اپنی تصویر پوسٹ کرکے روشنی میں آنے والے کشمیر کے ابھرتے ہوئے فٹبالر اور ایک مقامی کالج میں بی کام کے سال دوئم میں زیر تعلیم ماجد ارشد خان نے ماں کی آہ بکا کا علم ہوتے ہی دہشت گردی سے نہ صرف توبہ کرلی بلکہ جمعہ کے روز خود کو ریاست پولس حکام کے سامنے خود سپردگی بھی کر دی۔
واضح رہے کہ اس کی والدہ نے زارو قطار روتے اور سینہ کوبی کرتے ہوئے سوشل میڈیا کے توسط سے ماجد سے واپس آنے اور قومی دھارے میں شامل ہوجانے کی فریاد کی تھی۔سوشل میڈیا پر ماں کو اس حالت میندیکھ کر ماجد خان کا دل ایسا پسیجا کہ اس نے تنظیم سے منحرف ہو کر پولس کے سامنے خود سپردگی کر دی۔باتای جاتا ہے کہ ماجد اپنے دوست یاور نثار شیر گذر ی کے جنازے میں شرکت کرنے کے بعد دہشت گرد تنظیم میں شامل ہو گیا تھا۔
واضح رہے کہ شیر گذری انتہا پسند تھا اور اگست کے مہینے میں سلامتی دستوںکے ہاتھوں مارا گیا تھا۔پولس ذرائع کے مطابق ماجد فیالحال ایک پولس کیمپ میں ہے او رجلد ہی والدین کے حوالے کر دیا جائے گا۔ایک پولس افسر نے ٹوئیٹ کیا کہ ماجد ہمیں واپس مل گیا ہے۔یہ نہایت خوشی کا لمحہ ہے۔ ماؤںکی دعائیں بارگاہ خداوندی میں قبول ہوئیں ۔
ہماری ان تمام لڑکوں سے جنہوں نے ہتھیار اٹھا رکھے ہیں پر زور اپیل ہے کہ وہ اپنی ماؤں کے سائے میں پھر واپس آجائیں۔ماجد جب سے لاپتہ ہوا تھا اس کے دوست احباب ،گھر والے اور دیگر اعزا و اقربا اس سے گھر واپسی کی التجا کر رہے تھے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Kashmiri student majid khan hears his mothers cry and returns home after joining terrorists in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply