کشمیرمیں فوجی قافلہ پر دہشت گردوں کا حملہ،تین اہلکارشہید

سرینگر: جنوبی کشمیر کے سوپیاں ضلع میں آج علی الصباح فوجی قافلہ پر انتہا پسندوں نے گھات لگا کر حملہ کر دیا جس میں تین جوان شہید اور تین زخمی ہو گئے۔ اس حملہ کا فوجی ٹیم نے بھی جواب دیا اور دونوں طرف سے فائرنگ کے تبادلہ کی زد میں ایک خاتون بھی آگئی جس کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔ پولیس ترجمان نے یہ اطلاع دی ہے۔
تاہم دفاعی ترجمان نے بتایا کہ اس جھڑپ کے بارے میں معلومات حاصل کی جا رہی ہیں۔ موصولہ اطلاع کے مطابق اس علاقے میں جنگجوؤں کے چھپے ہونے کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسز نے پورے علاقے کا محاصرہ کرلیا۔ پولیس اور 44 راشٹریہ رائفلز نے کنگنو سوپیاں میں تلاشی مہم چلائی تھی مگر وہاں کسی جنگجوکے نہ ہونے کے بعد اس مہم کو بند کر دیا گیا۔
جب سیکورٹی فورس کے جوان وہاں سے واپس آ رہے تھے تو ملو چترگام میں چھپے جنگجوؤں نے علی الصباح دو بجے سیکورٹی جوانوں پر گھات لگا کر حملہ کر دیا جس میں دو افسران سمیت چھ سیکورٹی جوان زخمی ہو گئے۔ زخمیوں کو فوری طور پر اسپتال لے جایا گیا جہاں تین جوانوں نے اخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ دیا۔ ترجمان نے بتایا کہ جھڑپ کے دوران اپنے گھر میں موجود ایک خاتون کی گولی لگنے سے موت ہو گئی۔ حزب المجاہدین نے اس حملہ کی ذمہ دای قبول کی ہے۔

Title: kashmir terror attack 3 army jawans and a woman killed by militants | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply