وادی کشمیر میں دہشت گردانہ حملوں کی لہر کے بعد ہائی الرٹ

سری نگر: وادی کشمیر میں گذشتہ رات دہشت گردوں کی جانب سے سیکورٹی فورسز کے کیمپوں اور تھانوں پر پے درپے 6 حملوں کے بعد سے ،جس میں کم از کم16سی آر پی ایف اہلکار زخمی ہوئے ،سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کو بدستور ہائی الرٹ کر دیا گیا ہے۔ گذشتہ رات ہونے والے انتہا پسندانہ حملوں میں جہاں سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف)، ریاستی پولیس اور فوج کے کم ازکم 15 اہلکار زخمی ہوئے وہیں انتہا پسند ایک ریٹائرڈ جج کے محافظوں کے 4 خودکار ہتھیارلوٹنے میں کامیاب ہوگئے۔ جنوبی کشمیر میں انتہا پسندوں نے گذشتہ شام سے رات دیر گئے تک سی آر پی ایف کیمپوں، ایک پولیس تھانے اور ایک فوجی کیمپ پر حملہ کیا۔
ان حملوں میں سی آر پی ایف کے 9 اور فوج و ریاستی پولیس کے دو دو اہلکار زخمی ہوگئے۔ انتہاپسندوں نے اس کے علاوہ جنوبی ضلع اننت ناگ میں ایک ریٹائرڈ جج کی حفاظت پر مامور دو پولیس اہلکاروں کو زخمی کرکے 4 ہتھیاروں کو لوٹ لیا۔ یہ حملے اس حقیقت کے باوجود انجام دیے گئے کہ سیکورٹی فورسز کو 17 رمضان المبارک (جنگ بدر) کے پیش نظر پہلے ہی الرٹ پر رکھا گیا تھا۔ جنگ بدر یا غزوہ بدر 17 رمضان المبارک 2 ہجری بمطابق13 مارچ 624 کو پیغمبر اسلام حضرت محمدﷺکی قیادت میں 300 مسلمانوں اور ایک ہزار دشمن فوجیوں کے درمیان مدینہ میں بدر نامی مقام پر ہوا تھا۔
ذرائع نے بتایا کہتمام فیلڈ کمانڈروں کو الرٹ رہنے کے لئے کہا گیا تھا کیونکہ انتہا پسند اس دن کے موقعے پر وادی میں ہر سال سیکورٹی فورسز کے کیمپوں، پولیس تھانوں اور دیگر تنصیبات پر حملے کرتے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ریٹائرڈ جج کے محافظوں پر حملے کو چھوڑ کر انتہاپسندوں نے دیگر تمام حملے سیکورٹی فورس کیمپوں اور پولیس تھانوں پر دستی گرینیڈ یا رائفل گرینیڈ پھینک کر انجام دیے۔ ذرائع نے بتایا ’حملوں میں زخمی ہونے والے تمام اہلکاروں کی حالت خطرے سے باہر ہے ۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Kashmir on high alert after militants carry out multiple back to back strikes in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply