کشمیر میں کشیدگی کے باعث ’کاروان امن‘ بس سروس معطل

سری نگر:وادی کشمیر میں حزب المجاہدین کمانڈر برہان وانی کی 8 جولائی کو سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں ہلاکت کے بعد پیدا شدہ احتجاجی مظاہروں کی لہر اور جاری کرفیو کے پیش نظر جموں وکشمیر کے موسم گرما کے دارالحکومت سری نگر اور پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کی دارالحکومت مظفرآباد کے درمیان چلنے والی ہفتہ وار ’کاروان امن‘ بس سروس کو پیر کے روز ایک بار پھر معطل کردیا گیا۔
سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ طرفین نے وادی کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر بس سروس کو معطل کرنے کا فیصلہ باہمی اتفاق رائے سے لیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مسافروں کو پہلے ہی اس فیصلے سے آگاہ کیا گیا ہے۔ رواں سال کے دوران یہ پانچویں دفعہ ہے کہ جب سری نگر اور مظفرآباد کے درمیان ’کاروان امن بس‘ نہیں چل سکی۔ 14 مارچ کو سرحد کے اس پار مٹی کے تودے گرآنے ، 4 اپریل کو پاکستان کے سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹوکی برسی کے موقع پر اور 4 جولائی کو عیدالفطر کے پیش نظر اس بس سروس کو معطل کردیا گیا تھا۔
گذشتہ پیر یعنی 11 جولائی کو بھی یہ بس وادی کی کشیدہ صورتحال کے پیش نظر معطل کردی گئی تھی۔قابل ذکر ہے کہ سری نگر اور مظفرآباد کے درمیان چلنے والی اس ہفتہ وار بس سروس کا آغاز 7 اپریل 2005 کو ہوا تھا اور تب سے اِس کے ذریعے ہزاروں لوگ آرپار اپنے عزیز واقارب سے ملے ہیں۔ واضح رہے کہ وادی میں 8 جولائی کو حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد بھڑک اٹھنے والی احتجاجی لہر کے دوران تاحال 42 افراد ہلاک جبکہ قریب 3500 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔(یو ا ین آئی)

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Karvan e aman bus service suspended again in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply