ہند پاک سرحد پر فائرنگ کے واقعات میں اضافہ سے حریت کانفرنس سخت تشویش میں مبتلا

سری نگر: میرواعظ مولوی عمر فاروق کی قیادت والی حریت کانفرنس نے بھارت اور پاکستان کے درمیان بڑھتی ہوئی سرحدی کشیدگی پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے دونوں ممالک کی سیاسی قیادت پر زور دیا ہے کہ وہ سیاسی دوراندیشی اور تدبر کا مظاہرہ کرتے ہوئے کشمیر سمیت تمام حل طلب مسائل کے حل کے لئے با معنی مذاکراتی عمل کا راستہ اختیار کریں۔یہاں جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ دونوں ممالک کی سرحدوں پر آر پار گولہ بھاری سے دونوں اطراف کے بے گناہ عوام کو خمیازہ بھگتنا پڑ رہا ہے اور اس کشیدہ صورتحال کے نتیجے میں جان و مال کی زیاں کے علاوہ سرحدی علاقوں میں رہ رہے لوگوں کو اکثر و بیشتر نقل مکانی پربھی مجبور ہونا پڑ رہا ہے۔
بیان میں کہاگیا کہ اس حقیقت کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا کہ دونوں ممالک کے درمیان تناؤ اور کشیدہ صورتحال کی بنیادی وجہ مسئلہ کشمیر ہے اور اس مسئلے کی وجہ سے ہی دونوں ممالک کے درمیان ماضی میں کئی خونریز جنگیں ہو چکی ہیں اور آج بھی دونوں ممالک کی سرحدوں پر جنگ جیسی صورتحال موجود ہے۔.بیان میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے اس موقف کا پھر اعادہ کیا گیا کہ مسائل کے حل کے لئے جنگ نہیں بلکہ مذاکراتی عمل ایک واحد راستہ ہے اور یہ کہ دونوں ممالک کو مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھانے چاہئیں۔ حریت نے کہا کہ مسئلہ کشمیر نہ صرف ہندو پاک بلکہ پورے جنوبی ایشیائی خطے کے امن کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے اور اس مسئلے کو یہاں کے عوام کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق حل کئے بغیر اس پورے خطے کے دائمی امن اور استحکام کو خطرات لاحق رہیں گے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hurriyat m concerned over rising incidents of cross loc firing in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply