وظیفہ خور مولویوں کو کشمیر میں کوئی خوش آمدید نہیں کہے گا،وہ مودی حکومت کے لیے شطرنج کے مہرے ہیں

سری نگر: بزرگ علیحدگی پسند رہنما و حریت کانفرنس (گ) کے چیئرمین سید علی گیلانی، حریت کانفرنس (ع) کے چیئرمین میرواعظ مولوی عمر فاروق اور جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں 13جولائی کے مجوزہ پروگرام پر قدغن لگانے، دیگر حریت پسند راہنماؤں کو مسلسل اپنے گھروں اور پولیس اسٹیشنوں میں نظربند رکھنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اعلان کیا کہ14جولائی جمعرات کو آر پار مکمل ہڑتال، 15جولائی جمعة المبارک کو مکمل ہڑتال اور بعد نمازِ جمعہ بھرپور احتجاج اور ائمہ مساجد اپنے خطابات میں مطالبہ حق خودارادیت دہرائیں گے۔
انہوں نے ائمہ مساجد اورمولویوں کو کشمیر بھیجنے کے منصوبے کو ایک لاحاصل عمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ بے چارے مولوی اور پیر سرکار کے وظیفہ خوار لوگ ہیں اور مسٹر نریندر مودی اور ان کی حکومت انہیں شطرنج کے مہروں کے طور استعمال کرنا چاہتی ہے، البتہ کشمیر میں ان حضرات کا کوئی خریدار نہیں ملے گا اور یہ چائے پانی پی کر واپس تشریف لے جائیں گے۔ بیان میں حریت پسند لیڈران مسٹر گیلانی کو اپنے ساتھیوں سمیت گرفتار کرکے پولیس اسٹیشن ہمہامہ میں بند کرنے، میر واعظ کو تھانہ نگین میں بند رکھنے اورمسٹر ملک کی مسلسل نظربندی کی بھی مذمت کی گئی۔
اپنے ایک مشترکہ بیان میں مسٹر گیلانی ، میرواعظ عمر اور مسٹر یاسین ملک نے اقوامِ متحدہ سیکریٹری جنرل مسٹر بانکی مون کے کشمیر کی صورتحال پر بیان دینے کو ایک اچھی علامت قرار دیتے ہوئے کہا کہ وقت آگیا ہے جب اس عالمی ادارے کو بیان بازی سے آگے بڑھ کر کشمیر کے دیرینہ تنازعے کو حل کرنے کی خاطر ٹھوس اقدامات اٹھانے چاہیے اور اس خطے میں انسانی زندگیوں کو درپیش خطرات پر روک لگانے کے لیے اپنا رول ادا کرنا چاہیے۔(یو این آئی)

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Geelanimalikmirwaiz call for complete band on friday in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply