وادی کشمیر میں بھیانک سیلاب کے تین سال بعد بھی اس کی تلخ یادیں تازہ

سری نگر: وادی کشمیر میں7 ستمبر 2014 کو آنے والے تباہ کن سیلاب کو تین سال مکمل ہوگئے ہیں۔ سیلاب کے سبب اہلیان وادی کو آج ہی کے دن تاریخ کے سخت ترین دن کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ وادی میں جمعرات کو جہاں حکومتی مشینری نے مستقبل میں سیلاب کے قہر سے بچنے کے اقدامات پر بحث کرنا بھی ضروری نہیں سمجھا، وہیں سوشل میڈیا پر سرگرم کشمیری سیلاب کی تلخ یادوں کو تازہ کرتے ہوئے نظر آئے۔ معروف قلم کار و شاعر ایاز رسول نازکی نے فیس بک پر اپنی تین سالہ پرانی پوسٹ شیئر کرتے ہوئے لکھا ’تین سال قبل کیا بھیانک اور خوفناک منظر تھا۔ شاید سب کچھ مرجانے سے قبل یہ میرا آخری اپ ڈیٹ تھا‘۔ ایاز نازکی نے اپنی متذکرہ پوسٹ میں لکھا تھا ’ایس او ایس۔ فاروق نازکی بدستور ریسکیو کے جانے کا انتظار کررہے ہیں۔ وہ اور ا±ن کی بیوی دونوں انسولین پر ہیں۔ وہاں ابھی تک کوئی ریسکیو پارٹی نہیں پہنچی ہے‘۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Flood hit families await compensation recount horrific tales of rescue in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply