ارم حبیب نے پائلٹ بن کر پورے کشمیر کا سر فخر سے بلند کر دیا

سری نگر: دنیا بھر میں اور خاص طور پر ہندوستان میں کشمیر ی خواتین کا سر اس وقت فکر سے بلند ہو گیا جب ایک کشمیر لڑکی ارم حبیب نے طایر اڑانے کی تربیت مکمل کر کے پائلٹ بننے والی پہلی کشمیری خاتون ہونے کا اعزاز پالیا۔

30سالہ ارم حبیب امریکہ میں طیارہ اڑانے کی تربیت حاصل کر کے سری نگر واپس پہنچی ہی تھیں کہ گو ایر (GoAir)اور انڈیگو نے انہیں ملازمت کی پیش کش کر دی۔

ارم نے شیر کشمیر ایگریکلچر سائنس اینڈ ٹینالوجی یونیورسٹی دہرہ دون سے گریجویشن اور پوسٹ گریجویشن کیا۔ان کے والدین چونکہ یہ چاہتے تھے کہ وہ سرکاری نوکری کریں اس لیے ان کا پی ایچ ڈی کے لیے اندراج کردیا گیا۔

لیکن پی ایچ ڈی کرتے ہوئے ڈیڑھ سال ہی ہوئے تھے کہ انہوں نے ڈاکٹریٹ کو خیرباد کہا اور امریکہ کے ایک فلائنگ اسکول میںداخلہ حاصل کر لیا۔2016میں میامی سے انہوں نے ٹریننگ مکمل کر کے ہندوستان واپسی کی اور کمرشیل پائلٹ لائسنس حاصل کر لیا ۔

جب سبھی نے یہ کہاکہ کسی کشمیر ی لڑکی کا پائلٹ کی اسامی پرتقرر نہیں ہو سکتا تو وہ پریشان ہو گئی لیکن اس کے والد نے اس کی حوصلہ افزائی کی جس سے اس میں نیا جوش اور نئی امنگ جاگ اٹھی۔اور آج ارم حبیب کشمیر کی پہلی اور سب سے کم عمر پائلٹ ہیں۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Eram habib becomes kashmiris first women pilot in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply