جنوبی کشمیر میں مظاہرہ کرنے والی خواتین کو منتشر کرنے کے لیے سیکورٹی فورسز کی ہوا میں فائرنگ

سری نگر:سیکورٹی فورسز نے منگل کے روز جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں احتجاجی خواتین کو منتشر کرنے کے لئے ہوائی فائرنگ کی۔ مقامی خواتین ضلع کے ’اوکے‘ نامی گاؤں میں’کارڈن و تلاشی آپریشن‘ کے دوران سیکورٹی فورسز کی جانب سے کچھ مقامی دیہاتیوں کو زدوکوب کا نشانہ بنانے کے خلاف احتجاج کررہی تھیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع کولگام کے ’اوکے‘ نامی گاؤں میں انتہا پسندوں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فوج ، جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) اور سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) نے آج صبح مذکورہ گاؤں کا محاصرہ کیا اور مشترکہ تلاشی آپریشن شروع کیا۔
انہوں نے بتایا کہ انتہا پسندوں کے فرار ہونے کے تمام راستے سیل کرنے کی غرض سے گاؤں کو چاروں اطراف سے گھیر لیا گیا جبکہ مرد اراکین کو ایک مقامی اسپورٹس گراونڈ میں جمع ہونے کے لئے کہا گیا۔ تاہم جب مرد اراکین اسپورٹس گراونڈ میں جمع ہوئے تو خواتین نے احتجاج کرنا شروع کیا اور سیکورٹی فورسز پر مرد اراکین کو مارنے پیٹنے کا الزام عائد کیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے آزادی حامی نعرے بازی کرنے اور تلاشی کی کارروائی میں رکاوٹ بننے والی خواتین کو منتشر کرنے کے لئے ہوائی فائرنگ کی۔ سرکاری ذرائع نے مزید بتایا کہ سرچ آپریشن کے دوران کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔ دریں اثنا سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر چند ایک ویڈیوزپوسٹ کیے گئے ہیں جن میں مذکورہ گاؤں (اوکے) میں درجنوں خواتین کو سیکورٹی فورسز کی کاروائی کے خلاف چیخ و پکار اور اپنے بال نوچتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Crcakdown in kulgam army resort to aerial firing to disperse protesting women in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply