مرکزی حکومت ہی جموں و کشمیر میں پائیدار امن نہیں چاہتی: نیشنل کانفرنس

جموں: نیشنل کانفرنس نے مرکزی سرکار پر کشمیری عوام کے مذہبی معاملات میں بے جا مداخلت کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وہ ریاست میں پائیدار امن نہیں چاہتی۔پارٹی کے معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفےٰ کمال نے کہا کہ مرکزی سرکار کے رویہ سے ایسا صاف دکھائی دے رہا ہے کہ مرکزی حکومت ریاست جموں وکشمیر میں پائیدار اور دیرپا امن کی خواہاں نہیں ہے۔
شیر کشمیر بھون جموں میں پارٹی کارکنوں اور عہدیداروں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے معاون جنرل سکریٹری نے کہا کہ وزارت داخلہ کی طرف سے کشمیر میں مساجد، مدارس اور میڈیا کو کنٹرول کرنے تجویز جمہوری اور سکولر کردار کے منافی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے اقدامات سے مسئلہ کشمیر کے ہیت اور حقیقت تبدیل نہیں کی جاسکتی ہے۔
ڈاکٹر کمال نے کہا کہ کشمیر کے تئیں مرکزی حکومت کے رویہ کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ جو پیلٹ گن گذشتہ سال کی ایجی ٹیشن کے دوران انتہائی مہلک ثابت ہوئی اور جس پیلٹ گن کو بند کرنے کے لئے ریاست، ملک اور بیرونِ ملک احتجاج ہوئے ،اسی پیلٹ گن کی تعداد 640سے 5,589کی کردی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ مرکزی سرکار صرف اور صرف طاقت کے بل بوتے پر مسئلہ کشمیر کی حقیقت کو دبانے کی کوششوں میں مصروف ہے ، جو نہ انتہائی تشویشناک اور افسوناک ہے۔ کسی قوم کو دبانے کی ایک حدہوتی ہے اور جب وہ حد پار ہوجاتی ہے تو انقلاب آنے کا قوی امکان ہوتا ہے ، جو کسی بھی مملکت کی سالمیت اور آزادی کے لئے خطرہ بن سکتا ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Centre doesent want stability in kashmir sheikh mustafa kamal in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply