کشمیر میں متعدد مقامات پر پرتشدد احتجاجی مظاہرے

سری نگر:وادی کشمیر میں منگل کو متعدد مقامات پر احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں ہوئیں جس دوران سیکورٹی فورسز نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا شدید استعمال کیا۔
بالائی سری نگر کے بٹہ مالو میں درجنوں نوجوان آزادی کے حق میںاور سیکورٹی فورسز کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے۔ تاہم وہاں پہلے سے تعینات سیکورٹی فورسز نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کا استعمال کیا جس کے بعد طرفین کے مابین جگہ جگہ جھڑپیں ہوئیں جس کا سلسلہ تقریباً ایک گھنٹے تک جاری رہا۔
جنوبی کشمیر سے موصولہ اطلاعات کے مطابق ضلع کولگام کے قاضی گنڈاور ضلع شوپیان میں سینکڑوں کی تعداد میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے اور بڑے چوراہوںکی طرف احتجاجی مارچوں کی صورت میں بڑھنے لگے۔ تاہم وہاں پہلے سے تعینات سیکورٹی فورسز نے انہیں آگے جانے کی اجازت نہیں دی اور انہیں واپس جانے کے لئے کہا۔ جب احتجاجی مارچوں کے شرکاءنے واپس جانے سے انکار کیا تو سیکورٹی فورسز نے انہیں منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کا استعمال کیا۔
شمالی کشمیر کے ا سیبوں کے شہر سوپور ، ضلع کپواڑہ اور ضلع بانڈی پورہ سے بھی احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ واضح رہے کہ کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے وادی میں جاری ہڑتال میں یکم ستمبر تک توسیع کا اعلان کر رکھا ہے۔
تاہم کسی بھی احتجاجی مظاہرے یا احتجاجی ریلی کی قیادت کرنے سے روکنے کے لئے مسٹر گیلانی کو اپنی رہائش گاہ پر، میرواعظ کو چشمہ شاہی ہٹ نما جیل اور یاسین ملک کو سینٹرل جیل سری نگر میں نظربند رکھا گیا ہے۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Brief lifting of curfew in kashmir prompts fresh violence in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply