بی جے پی جموں و کشمیر کی مخلوط حکومت سے باہر ہوگئی، ریاست میں گورنر راج،محبوبہ مفتی بھی مستعفی

نئی دہلی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی ) غیر متوقع اقدام کرتے ہوئے منگل کے روز جموں و کشمیر میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی ( پی ڈی پی) کے ساتھ مخلوط حکومت سے باہر ہوگئی۔

بی جے پی صدر امیت شاہ کی جموں و کشمیر حکومت میں پارٹی کے وزراءکے ساتھ ایک ہنگامی میٹنگ کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا جس کو فوراً اعلان کرد یا گیا کہ پارٹی محبوبہ مفتی کی پی ڈی پی کے ساتھ تین سالہ اتحاد توڑ رہی ہے اورمخلوط حکومت سے باہر ہو رہی ہے۔

بی جے پی جنرل سکریٹری رام مادھو نے کہا کہ مرکز سے حمایت ملنے کے باوجود پی ڈی پی کشمیر میں صورت حال پر قابو نہ پاسکی۔اس لیے وہ مخلوط حکومت سے باہر ہو رہی ہے ۔

اور کہاکہ پارٹی ریاست میں گورنرراج کے حق میں ہے۔جموں و کشمیر بی جے پی لیڈر کیوندرا گپتا نے کہا کہ پارٹی کے وزیروں نے وزیر اعلیٰ کو اپنے استعفے سونپ دیے۔

سینیئر پی ڈی پی وزیر نسیم اختر کے حوالے سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھی گورنر نریندر ناتھ ووہرا کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا۔

Title: bjp withdraws support to mehbooba government | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply