وادی کشمیر کے سبھی علاقوں سے کرفیو اٹھا لیاگیا، مگرپرتشدد احتجاجی مظاہرے بدستور جاری

سری نگر: (یو ا ین آئی) گذشتہ 54 روز میں پہلی مرتبہ بدھ کو وادی کشمیر کے سبھی علاقوں سے کرفیو ہٹالیا گیا، تاہم دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت چار یا اس سے زیادہ افراد کے ایک جگہ جمع ہونے پر پابندی بدستور جاری رکھی گئی ہے۔
کرفیو کو اس حقیقت کے باجود ہٹالیا گیا ہے، کہ وادی کے بیشتر حصوں میں پرتشدد احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شدت کے ساتھ جاری ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سری نگر کے پائین شہر کے نوہٹہ اور ایم آر گنج پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں گذشتہ 53 سے جاری کرفیو آج ہٹالیا گیا۔ تاہم انہوں نے بتایا کہ پائین شہر کے سبھی علاقوں میں امن وامان کی صورتحال کو بنائے رکھنے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی اضافی نفری بدستور تعینات رکھی گئی ہے۔
جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں 8 جولائی کو حزب المجاہدین کمانڈر برہان وانی اور اس کے دیگر دو ساتھیوں کی سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں ہلاکت کے بعد بھڑک اٹھنے والے پرتشدد احتجاجی مظاہروں کے بعد وادی کے بیشتر علاقوں میں کرفیو نافذ کردیا گیا تھا۔ اگرچہ کچھ ہفتے گذرجانے کے بعد وادی کے بیشتر علاقوں سے کرفیو اٹھا لیا گیا تھا، تاہم سری نگر کے پائین شہر اور سیول لائنز کے کچھ علاقوں کے علاوہ جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ، پلوامہ اور پانپور قصبہ جات میں اس کا نفاذ جاری رکھا گیا تھا۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Authorities lift curfew in kashmir valley as clashes erupt in some places in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News
What do you think? Write Your Comment