کشمیر میں سلامتی دستوں کی کارروائی میں12انتہاپسند ہلاک،حریت رہنماؤں نے دو روز کی ہڑتال کی کال دی

سری نگر: جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ضلع میں سلامتیدستوں اور انتہا پسندوں کے درمیان تین علیحدہ مسلح تصادموں او ر پھر اس کے خلاف جاری احتجاجی مظاہروں میں کم از کم12انتہا پسند بشمول دو کمانڈر اور ایک راہگیر ہلاک اور چار سیکورٹی اہلکار زخمی ہو گئے۔2010-11کے بعد انتہاپسندوں کے خلاف یہ ایک روز میں ہونے والے آپریشنوں میں اب تک کا سب سے بڑا آپریشن ہے۔
جنوبی کشمیر میں، جو کہ انتہا پسندوں کو گڑھ ہے، اتنی بڑی تعداد میں ہلاکتیں جنوبی کشمیر میں انتہاپسندوں پر ایک کاری ضرب ہے۔اگرچہ جموں و کشمیر پولس نے انتہا پسندوں کی حتمی شناخت نہیں کی ہے لیکن پولس حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک شدگان میں بڑے کمانڈرز بھی شامل ہیں۔
حریت لیڈر سید علی گیلانی جنہی،ں30مارچ کو رہا کر کئے 8سال بعد ممعہ کا خطبہ دینے کی اجازت دے دی گئی تھی،میر واعظ اور یٰسین ملک نے آج کی ہلاکتوں کے خلاف احتجاج میں آج اور کل (2اپریل) ہڑتال کی کال دی ہے۔ ان ہلاک شدگان کی بعد نماز عصر غائبانہ نماز جنازہ ہے۔حکومت نے ایک بار پھر حریت رہنماؤں کو خانہ نظر بند کر دیا اور جنوبی کشمیر میں موبائل اورانٹرنیٹ سروس معطل کر دی ۔

Title: at least 12 militants and one civilian killed in kashmir encounters in Urdu | In Category: کشمیر  ( kashmir ) Urdu News

Leave a Reply