بی ایس ایف جوان سری نگر کے رہائشی علاقوں میں واقع اسکولوں میںخیمہ زن

سری نگر:(یو ا ین آئی) گرمائی دارالحکومت سری نگر کی سڑکوں پر قریب ایک دہائی کے بعد تعینات کئے جانے کے ایک روز بعد بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف)نے منگل کو مولانا آزاد روڑ پر واقع تاریخی سری پرتاب (ایس پی) کالج اور ایکسچینج روڑ پر واقع ’کوٹھی باغ گرلز ہایئر سکینڈر اسکول‘ پر قبضہ کرکے وہاں پر اپنا ڈیرا ا ڈال دیا۔ ذرائع نے بتایا کہ سالانہ امرناتھ یاترا کی ڈیوٹی سے فارغ ہونے والے اِن بی ایس ایف اہلکاروں کو سری نگر کی سڑکوں پر تعینات کیا گیا ہے۔
انہوں نے بتایا کہ وہ (بی ایس ایف اہلکار) ریاستی پولیس اور دیگر نیم فوجی دستوں کو سری نگر میں امن وامان کی بحالی میں تعاون فراہم کریں گے۔تاہم سری نگر میں تعینات کئے گئے بی ایس ایف اہلکاروں میں سے بیشتر کے ہاتھوں میں مہلک ہتھیار نظر آئے۔ ایک رپورٹ کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں بشمول مغربی بنگال، راجستھان اور گجرات سے بی ایس ایف کی 26 اضافی کمپنیاں وادی روانہ کردی گئی ہیں جو یہاں ایک یا دو دنوں کے اندر پہنچ جائیں گی۔
مذکورہ رپورٹ کے مطابق ہر ایک کمپنی میں 100 اہلکار ہیں۔ تاہم مولانا آزاد روڑ اور ایکسچینج روڑ پر منگل کو لوگ اس وقت ششدرہوکر رہ گئے جب انہوں نے ٹرکوں، بسوں، چھوٹی اور پولیس گاڑیوں میں سوار بی ایس ایف اہلکاروں کو تاریخی ایس پی کالج اور کوٹھی باغ اسکول میں داخل ہوتے ہوئے دیکھا۔ اس سے لوگوں کے ذہنوں میں یہ خدشہ پیدا ہوا کہ بی ایس ایف کہیں90 کی دہائی کی طرح سرکاری و نجی عمارتوں بشمول تعلیمی اداروں پر پھر سے قابض نہ ہوجائے۔ارشاد احمد شاہ نامی ایک سرکاری ملازم نے بتایاکئی برسوں کے بعد بی ایس ایف کو پھر سے سری نگر میں تعینات کیا جارہا ہے۔
اس سے نوے دہائی کی اذیتوں کی یادیں تازہ ہوئی ہیں۔ مجھے خدشہ ہے کہ بی ایس ایف پھر سے سرکاری و نجی عمارتوں پر ڈیرا ڈالے گی اور شہر میں بنکر قائم کرے گی۔ بی ایس ایف نے 90 کے عشرے میں سینکڑوں سرکاری و نجی عمارتوں کو اپنے قبضے میں لیکر جنگجو مخالف کاروائیاں چلائی تھیں اور بالآخر 2005 میں آبائی والے علاقوں سے ہٹاکر سرحدوں پر تعینات کی گئی تھی۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: After re entering srinagar bsf occupied schools in residential areas in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply