حکومت کشمیر نے سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں جمعة الوداع کی نماز ادا کرنے کی اجازت نہیںدی

سری نگر: کشمیر انتظامیہ نے جمعہ کے روز سری نگر کے پائین شہر میں سخت ترین پابندیاں نافذ کرکے نوہٹہ میں واقع تاریخی و مرکزی جامع مسجد میں جمعتہ الوداع کی نماز ادا کرنے کی اجازت نہیں دی۔ ایک رپورٹ کے مطابق وادی میں ڈوگرہ شاہی حکومت کے بعد ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ جب تاریخی جامع مسجد میں جمعتہ الوداع کی نمازپر قدغن عائد کی گئی۔
جامع مسجد میں ہرسال جمعتہ الوداع کے موقع پر کم از کم ایک لاکھ لوگ نماز ادا کرتے تھے۔ اگرچہ جنوبی ضلع پلوامہ کے کاکہ پورہ میں جمعرات کو سیکورٹی فورسز کی کاروائی میں ایک عام نوجوان کی ہلاکت کے خلاف علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی طرف سے دی گئی احتجاج کی کال کے پیش نظر انتظامیہ نے سری نگر کے سات پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں گذشتہ شام کو ہی پابندیاں نافذ کرنے کا اعلان کیا تھا۔
تاہم جامع مسجد کے باہر شب قدر کی رات کو پیش آنے والے ڈپٹی سپرنٹنڈ آف پولیس محمد ایوب پنڈت کی ہلاکت کے واقعہ کے بعد پائین شہر میں جمعہ کی صبح سخت ترین پابندیاں نافذ کی گئیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ امن وامان کی صورتحال کو بنائے رکھنے کے لئے پائین شہر کے سات پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں جمعہ کی صبح پابندیاں نافذ کی گئیں۔ پابندیوں کے نفاذ کے طور پر پائین شہر کی بیشتر سڑکوں کو جمعہ کی صبح ہی سیل کردیا گیا تھا جبکہ ان پر لوگوں کی نقل وحرکت کو روکنے کے لئے بڑی تعداد میں سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی نفری تعینات کی گئی تھی۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: After dogra rule jummat ul vida prayers disallowed for the first time in jamia masjid srinagar in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply