جموںو کشمیر پولس سربراہ نے ابو دوجانہ کی ہلاکت کو زبردست کامیابی قرار دیا

سری نگر: جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے لشکر طیبہ کے چیف کمانڈر ابو دوجانہ کی ہلاکت کو ریاستی پولیس اور سیکورٹی فورسز کے لئے بہت بڑی کامیابی قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابو دوجانہ گذشتہ کافی عرصے سے وادی میں سرگرم تھا اور اسے انتہا پسندوںسے متعلق اے پلس پلس زمرے میں رکھا گیا تھا۔ اس دوران انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر زون منیر احمد خان نے کہا کہ وادی میں لوگوں کے احتجاج اور رخنہ اندازی کے باوجود انتہاپسندوں کے خلاف کارروائی جاری رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ انتہاپسندوں کو گولیوں کا نشانہ بنانے سے پہلے انہیں خودسپردگی کی پیش کش کی جاتی ہے۔ منیر خان نے کہا ہم کوشش کرتے ہیں کہ انتہاپسند خودسپردگی کریں لیکن اگر وہ خودسپردگی نہیں کرتے ہیں اور فورسز پر فائرنگ کر تے ہیں تو پھر جوابی کاروائی کی جاتی ہے ۔ مسٹر خان نے آپریشن کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا ’جنگجوؤں کی جانب سے شدید فائرنگ کی گئی۔ اس کا جواب دیا گیا اور دونوں جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔
آپریشن ختم ہونے کے بعد ہی مارے گئے جنگجوؤں کی شناخت ہوپائی۔ ایک ابودوجانہ اور دوسرا عارف تھا۔ یہ ایک کلین آپریشن تھا، لیکن بیگم باغ کاکہ پورہ کے رہنے والی شہری مشتاق احمد خان کی ہلاکت ہوئی۔ اس کے علاوہ پانچ سے چھ افراد پیلٹ جبکہ دو لوگ گولی لگنے سے زخمی ہوئے‘۔پولیس سربراہ ڈاکٹر وید نے ابو دوجانہ کی ہلاکت کو بہت بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا ’پولیس کو مصدقہ اطلاع ملی تھی کہ ہاکری پورہ پلوامہ میں ایک گھر میں دو انتہاپسند چھپے ہوئے ہیں۔ پولیس اور سیکورٹی فورسز نے مذکورہ گاؤں کو محاصرے میں لیا۔ گھر میں موجود لوگوں کو باہر نکالا گیا۔ اس کے بعد طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ ہوا جس میں دو انتہاپسندوں کو ہلاک کیا گیا‘۔ انہوں نے کہا کہ ابو دوجانہ گذشتہ کافی عرصے وادی میں سرگرم تھا۔ انہوں نے کہا ’یہ سیکورٹی فورسز کے لئے کافی بڑی کامیابی ہے۔ یہ پاکستانی دہشت گرد یہاں گذشتہ کافی عرصے سے سرگرم تھا۔ یہ بات صحیح ہے کہ بہت بار وہ سیکورٹی فورسز کے محاصروں سے فرار ہونے میں کامیاب ہوا۔ لیکن اس بار یہ ممکن نہیں ہوا‘۔ ڈاکٹر وید نے آپریشن میں حصہ لینے والے پولیس اور سیکورٹی فورسز اہلکاروں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ’وہ نہایت مطلوب انتہاپسندتھا۔ اس کو اے پلس پلس زمرے میں رکھا گیا تھا۔ میں ان جوانوں کو مبارکباد پیش کرتا ہوں جنہوں نے یہ کام انجام دیا‘۔ پولیس سربراہ ڈاکٹر وید نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ’مجھے ان اہلکاروں پر فخر ہے جنہوں نے پلوامہ میں لشکر طیبہ کمانڈر ابو دوجانہ سمیت دو دہشت گردوں کو ہلاک کیا۔ جئے ہند‘۔۔ فوج کی 15 ویں کورپس کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل جے ایس سندھو نے کہا کہ ابو دوجانہ کے ساتھ ہلاک ہونے والا دوسرا دہشت گردبینک ڈکیتیوں میں ملوث تھا ۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Abu dujana was category a let terrorist says goc 15 corps in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News
Tags:

Leave a Reply