جموں و کشمیر میں 200تا300دہشت گرد سرگرم ہیں:پولس سربراہ دلباغ سنگھ

جموں : جموں و کشمیر پولس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ ریاست میں 200تا 300دہشت گرد سرگرم عمل ہیں اور موسم سرما آنے سے پہلے پہلے جتنے بھی ممکن ہو سکتے ہیں دہشت گردوں کو جموں و کشمیر میں داخل کرنے کے لیے پاکستان نے سرحد پار سے فائرنگ میں بہت زیادہ اضافہ کر دیا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگرچہ در اندازوں کا صفایہ کر کے در اندازی کی کئی کوششیںناکام بنادی گئیں اس کے باوجودحال ہی میں دہشت گردوں کی ایک بڑی تعداد ریاست میں داخل ہو گئی ہے۔

سنگھ نے میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ایک اندازے کے مطابق جموں وکشمیر میں200سے300تک دہشت گرد سرگرم ہیں ۔

مسٹر سنگھ نے مزید کہا کہ دہشت گردوں کی تعداد بھی یکساں نہیں رہتی بلکہ گھٹتی برھتی رہتی ہے۔ ڈائریکٹر جنرل آف پولس نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے کشمیر اور جموں خطہ دونوں جگہ جنگ بندی کی بارہا خلاف ورزی کی جا چکی ہے۔

اس وقت بین الاقوامی سرحد سے متصل علاقوں کناچک، آر ایس پورہ اور ہیرا نگر اور ایل اوسی سے متصل علاقوں،پونچھ،راجوری،اڑی،نمبلا، کرناہ اور کیرانمیں فائرنگ جاری ہے۔جنگ بندی کی یہ خلاف ورز یاں صرف اور صرف موسم سرما کی آمد سے پہلے پہلے زیادہ سے زیادہ تعداد میں دہشت گردوں کو ریاست میں داخل کر دینے کے مقصد سے کی جارہی ہیں۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: 200 300 terrorists active in jk pak trying to push in more top cop in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.