بے انجن دوڑتی ٹرین کا ویڈیو دیکھیں کیسے ہزاروں مسافروں کی جان خطرے میں تھی

بھونیشور: یہ کوئی بغیر انجن یا بغیرڈرائیور والی ٹرین نہیں ہے بلکہ یہ 22ڈبوں والی وہ ٹرین ہے جوگجرا ت کے شہر احمد آباد سے اڑیسہ کے شہر پوری جا رہی تھی کہ اڑیسہ کے دارالحکومت بھونیشور سے380کلومیٹر کی دوری پر ٹیٹلا گڑھ ریلوے اسٹیشن پر اس کا انجن جیسے ہی ٹرین سے الگ کیا گیا ٹرین کے تمام ڈبے اسٹیشن سے کالا ہانڈی ضلع میں کیسینگا کی جانب چل پڑے اور جب تک ریلوے حکام حرکت میں آتے بے انجن ٹرین 10کلومیٹر کا فاصلہ طے کرچکی تھی۔کسینگا اسٹیشن سے پہلے بڑے بڑے پتھرریلوے لائن پر بچھا کرٹرین کو روک لیا گیا۔
عام طور پر جب ٹرین کاانجن ہٹایا جاتا ہے تو بوگیوں کے پہیوں میں اسکڈ بریک لگا دیہے جاتے ہیں تاکہ پہہیے جام رہیں اور آگے پیچھے حرکت نہ کر سکیں۔
لیکن وہاں کام کر رہے ملازمین نے اسکڈ بریک نہیں لگائے نتیجہ میں انجن ہٹتے ہی ٹرین کے ڈبے پیچھے کی جانب دوڑتے چلے گئے۔جس وقت یہ ڈبے بے انجن دوڑ رہے تھے تو ٹرین خالی نہیں تھی بلکہ اس وقت ٹرین میں کم وبیش ایک ہزار مسافر تھے۔

Title: train runs without engine for 10 km | In Category: دلچسپ خبریں  ( interesting-facts )

Leave a Reply