یوگی آدتیہ ناتھ کے کام کاج کے ڈھنگ میں وزیر اعظم مودی کی جھلک

نئی دہلی:اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ، راجستھان وغیرہ ریاستوں میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی ترقی کے ماڈل کو چھوڑکر مکمل طور پر گجرات ماڈل کو اپنا لیا ہے اور اسی کے مطابق’وائبرینٹ یوپی‘ منصوبہ بندی میں مصروف ہیں۔ وزیر اعلیٰ کے قریبی ساتھی اور ریاستی بی جے پی کے ترجمان ڈاکٹر چندر موہن نے یہاں یو این آئی سے بات چیت میں کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ نے وزیر اعلیٰ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد وزیر اعظم کی طرح ہی 18 سے 20 گھنٹے کام کرنا شروع کر دیا ہے۔ وہ دن میں باقاعدہ کام کے بعد شام کو روزانہ مختلف محکموں کے کام کاج کا جائزہ لیتے ہیں اور مستقبل کی منصوبہ بندی کے بارے میں اس کا حل تلاش کر تے ہیں۔ حکام کو وزیر اعلیٰ کے نقطہ نظر سے آگاہ کیا گیا ہے اور اتر پردیش کے لئے میعاد بند ترقی کے منصوبے بنانے کو کہا گیا ہے۔
ترقی کا ہدف مقرر کرنے کی طرف وزیروں کے گروپوں کی تشکیل کی گئی ہے۔ ڈاکٹر چندر موہن نے کہا کہ وزیر اعلیٰ اتر پردیش کی ترقی کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی کے منصوبہ کو آگے بڑھا رہے ہیں۔ انہوں نے ریاست کی ترقی کے لیے مکمل توجہ گجرات ماڈل پر مرکوز کیا ہے اور اس لئے وائبرینٹ یوپی کا نیا نعرہ دیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے سب سے پہلے توانائی اور رابطہ سازی کو مضبوط کرنے پر توجہ مرکوز کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ضلع ہیڈکوارٹروں کو 24 گھنٹے بجلی دینے اور تحصیل اور بلاک سطح پر 18-20 گھنٹے بجلی دینے کا فیصلہ اس جانب پہلی پیش رفت ہے۔ پوری ریاست میں بجلی کی تقسیم کے نظام کی خامیوں کو درست کرنے اور گاؤں میں سال بھر 24 گھنٹے بجلی فراہم کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اسی طرح سے سڑکوں کو درست کرنے کے لیے 15 جون تک ہر سڑک پر ہونے والے گڈھوں کی بھرائی کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں صنعتوں کو لے کر برسوں سے چھائی بے حسی کو دور کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات کئے جا رہے ہیں۔
آگرہ اور زیور میں ہوائی اڈے قائم ہونے سے مغربی اترپردیش میں روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ ڈاکٹر چندر موہن نے بتایا کہ ملک کے جانے مانے صنعت کا راتر پردیش میں سرمایہ کاری کرنے کے خواہش مند ہیں۔ انہیں ایک ہی جگہ پر ہر قسم کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے گجرات ماڈل پر سنگل ونڈو نظام شروع کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں کسانوں کے قرض معاف کرنے کے بعد انہیں فصل انشورنس کی منصوبہ بندی کا فائدہ اٹھانے کے لئے نوڈل ایجنسی کے تعین سمیت دیگر تمام اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ آلو کی کاشت کو لے کر اور کھیتوں میں جلے ہوئے ٹرانسفارمر کو 48 گھنٹے کے اندر تبدیل جیسے فیصلوں سے کسانوں کو فوری راحت ملی ہے۔ حکومت کا مقصد کسانوں کے لیے کھیتی کو سود مند کاروبار بنانا ہے۔ چینی ملوں کی طرف سے گنا کسانوں کو فوری طور پر رقم ادا کرنے کے لئے بھی کہا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ روزانہ بڑی تعداد میں لوگوں سے مل رہے ہیں اور ان میں مسلمان خواتین کی تعداد بھی بہت ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کے اقتدار سنبھالتے ہی مجرموں میں خوف بڑھا ہے اور عوام کو تحفظ کا احساس ہو رہا ہے۔ وزیر اعلیٰ قانون کے تئیں بہت حساس ہیں اور اترپردیش پولیس کی شبیہ کو تبدیل کرنے کے لیے وہ سابق پولیس ڈائریکٹر جنرل پرکاش سنگھ کی پولیس اصلاحات سے متعلق رپورٹ کی سفارشات کو لاگو کرنے کے بارے میں تبادلہ خیال کر رہے ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Yogi adityanath works 18 to 20 hours in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply