احمد آباد میں سوشل میڈیا پر جھوٹی افواہ سے ہجومی تشدد میں ایک عورت ہلاک

احمد آباد:ہندوستان میں ہجومی تشدد کی تازہ ترین واردات میں ادھیڑ عمر کی ایک عورت کو محض شبہ کی بنیاد پرپیٹ پیٹ کر ہلاک کر دیا گیا۔ یہ واردات گجرات کے شہر احمدمیں پیش آئی۔

واقعہ یوں بتایاجاتاہے کہ سوشل میڈیا کے توسط سے یہ افواہ پھیلائی گئی کہ شہر میں بچہ اغوا کرنے والی عورتوں کاایک گروہ شہر میں گھوم رہا ہے۔ بس پھر کیا تھا لوگ شاید اسی کے منتظر تھے۔ سب متحرک ہو گئے۔

اور دیکھتے ہی دیکھتے شہر کے ویداج علاقہ میں40سالہ ایک بھکارن کو بچہ اغوا کرنے والے گروہ کی ممبر سمجھ کرلوگوں نے گھیر لیا اور اس بری طرح زدو کوب کیا کہ اس کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔

مقتولہ کی شناخت شانتی بین مروادی کے طور پر کی گئی ہے جو چار بھکارنوں کی اس ٹولی میں شامل تھی جو علاقہ میں گھر گھر جاکر بھیک مانگ رہاتھا ۔ اسے شدید زخمی اور بیہوشی کے عالم میں احمد آباد سول اسپتال پہنچایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ لایا گیا قرار دے دیا۔

بھکارنوں کی اسی ٹولی کی دیگر تین عورتوں کو بھی جو بھیک مانگنے کے لیے راجستھان سے گکرات کے شہر احمد آباد آئی تھیں شہر کے مضافات میں جھونپڑ پٹی بستی میں ٹہری ہوئی تھیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Woman lynched in ahmedabad over social media rumours in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply