ڈوکلام تعطل دور کرنے میں کامیابی پر حکومت کو حزب اختلاف کے قائدین کی مبارکباد

نئی دہلی: ڈوکلام تعطل کے پرامن حل کو ہندستان کی سفارتی فتح قرار دیتے ہوئے اپوزیشن لیڈروں نے حکومت کی تعریف کی ہے۔ کانگریس کے سینئر لیڈر ششی تھرور نے ٹوئیٹر پر کہا ‘وزارت خارجہ کے سفارت کاروں اور وزیر اعظم کے دفتر کی موثر قیادت سمیت سب کو اس کا کریڈٹ جاتا ہے۔ اس کی تمام اہل وطن تعریف کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چینی فوج کو ڈوکلام سے ہٹنے اور پہلے جیسی صورتحال بحال کرنے کے لئے تیار کرنا وزارت خارجہ کی سفارتی فتح ہے۔
اس کے لئے وہ تعریف حق دار ہیں۔ کانگریس نے بھی اس معاملے میں کل اپنے ردعمل میں کہا تھا کہ اگر ڈوکلام سے چین اور ہندستان کی افواج کے ہٹنے کی بات مستقل طور پر سچ ثابت ہوتی ہے تو یہ خوش آئند ہے۔ تاہم پارٹی نے کچھ دن انتظار کرنے کی بات بھی کہی تھی۔ نیشنل کانفرنس کے صدر اور جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ نے بھی ڈوکلام مسئلے کے حل کو حکومت کی سفارتی فتح قرار دیا ہے۔
انہوں نے ریاست کے خصوصی درجہ پر مودی حکومت کے ساتھ جاری تنازعات کو درکنار کرتے ہوئے ڈوکلام کو وسیع تناظر میں دیکھتے ہوئے کہا کہ چین کے خلاف ہندستانی کی یہ سفارتی جیت اس لئے بھی کافی معنی رکھتی ہے کیونکہ اسے ڈھنڈورا پیٹنے کے بجائے نہایت پرامن طریقہ سے کیا گیا ہے۔ اس کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی ٹیم مبارک باد کے مستحق ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Withdrawal of troops by china from doklam is a victory for indian diplomacy opposition in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply