ماب لنچنگ روکنے کے اقدامات کی رپورٹ داخل کرنے کے حکم کی عدم تعمیل پر سپریم کورٹ کی ریاستوں کو لتاڑ

نئی دہلی:ہجومی تشدد کی روک تھام کے لیے کیے گئے اقدامات کے حوالے سے رپورٹ پیش کرنے کے اپنے حکم کی 18ریاستوں کے تعمیل نہ کیے جانے پر سخت انتباہ دیتے ہوئے ان ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو حکم دیا کہ ایک ہفتہ کے اند رپورٹ پیش کردی جائے۔

چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بینچ نے کہا کہ اب تک صرف 11ریاستوں نے ہی اپنی رپورٹ پیش کی ہے۔چیف جسٹس نے اسے آخری مہلت بتاتے ہوئے انتباہ دیا کہ اگر ایک ہفتہ کے اندر رپورٹیں پیش نہ کی گئیں تو پھر ریاستی سکریٹری داخلہ کو عدالت میں شخصی طور پر پیش ہونا ہوگا ۔عدالت عظمیٰ نے کہا ہے کہ معاشرے میں امن اور ہم آہنگی کو ہر صورت میں برقرار رکھنا ہوگا۔

عدالت نے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کویہ ہدایت دیتے ہوئے کہ وہ اپنے سرکاری ویب سائٹس پر ہجومی تشدد کے خلاف رہنما ہدایات جاری کریں معاملے کی سماعت 13 ستمبر تک موخر کر دی۔

عدالت عظمیٰ نے یہ حکم کانگریس لیڈر تحسین پونہ والا کی اس عرضی پر جاری کیا ہے جس میں20جولائی کو ایک دودھ فروش اکبر خان کی ہجومی تشدد میں ہلاکت کا حوالہ دیتے ہوئے سپریم کورٹ کے حکم کی خلاف ورزی کرنے پر راجستھان کے افسران بالا بشمول چیف سکریٹری اور پولس سربراہ کے خلاف توہین عدالت کارروائی کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Will summon home secy if you dont file compliance report on lynching sc to states in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply