مغربی بنگال کے فرقہ وارانہ فسادات پر ترنمول کانگریس کے مسلم لیڈران کچھ بھی بولنے کو تیار نہیں

کلکتہ:مغربی بنگال میں حالیہ دنوں میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات اور انتظامیہ کی ناکامی کی وجہ سے ترنمول کانگریس کے مسلم ممبران اسمبلی و ممبران پارلیمنٹ اور دیگر پارٹی لیڈروں میں سخت ناراضگی ہے۔مگر پارٹی اعلیٰ کمان کی سخت گرفت اور کارروائی کی خوف کی وجہ سے اس مسئلے پر آن دی ریکارڈ کچھ بھی بولنے سے گریز کرتے ہیں۔
کئی مسلم ممبران پارلیمنٹ و ممبر ان اسمبلی نے آف دی ریکارڈ گفتگو میں ریاست میں ہوئے حالیہ فسادات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب حکومت کی ناکامی کا نتیجہ ہے ،آر ایس ایس کی سرگرمی بڑھ رہی ہے۔وہ فرقہ ورانہ خطوط پر لوگوں کو بھڑکارہے ہیں مگر ترنمول کانگریس صرف کانگریس اور بایاں محاذ کو ختم کرنے کی کوشش میں لگی ہوئی ہے۔کئی لیڈروں نے یواین آئی کے نمائندے کو فون کرکے فسادات کی رپورٹنگ کی فرمائش کرتے ہوئے کہاکہ ہم لوگ تو مجبور ہیں کم سے کم میڈیا میں سچائی سامنے آنی چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ ہم کچھ بھی کرنے سے معذور ہیں۔ اگر وہ حکومت کی مرضی کے بغیر کوئی بھی بیان دیا تو انہیں کنارہ لگادیا جائے گا اوروہ کہیں کے بھی نہیں رہیں گے۔
ایک سینئر مسلم لیڈر جنہوں نے چند مہینے قبل ہی کانگریس چھوڑ کر ترنمول کانگریس میں شامل ہوئے ہیں نے یو این آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ مجبور ہیں او ر انہوں نے اپنی کشتی جلاکر ترنمول کانگریس میں شامل ہوئے ہیں۔جس طریقے سے عام آدمی بے بس ہے اسی طرح ہم لوگ ترنمول کانگریس میں مجبور ہیں ، کچھ بھی بولنے کی جرات کی تو کنارہ لگادیے جائیں گے۔بلکہ عام آدمی اس ظلم کے خلاف صدائے احتجاج بھی بلند کرسکتا ہے مگر ہم کچھ بھی نہیں کرسکتے ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Why the tmc leaders in west bengal silent over communal riots in state in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply