پہاڑی خطہ کو نظر انداز کیے جانے پر بنگال بی جے پی سربراہ کو کالمپونگ میں کالے جھنڈے دکھائے گئے

کلکتہ (یو این آئی )مغربی بنگال بی جے پی کے صدر دلیپ گھوش نے آج واضح کیا ہے کہ گورکھا جن مکتی مورچہ کے صدر بمل گورنگ ہی دارجلنگ کے لیڈر ہیں۔گورکھا علاقائی کونسل (جی ٹی اے)کے نئے سربراہ بنے تمانگ ”گورکھا تحریک کو سبوتاژ“ کرنے والے ہیں۔ نیو جلپائی گوڑی ریلوے اسٹیشن پر جیسے ہی دلیپ گھوش ٹرین سے اترے تو اسٹیشن سے چند کلومیٹر کی دوری پر واقع کالمپانگ ضلع تک انہیں کالی جھنڈیاں ، جھنڈے اور پوسٹرز دکھائے گئے۔میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے گھوش نے کہا کہ’ تمانگ نے چوں کہ دارجلنگ تحریک کو کمزور کیا ہے اس لیے عوام ان کے ساتھ نہیں ہیں۔گھو ش جو بی جے پی وفد کی قیادت کررہے ہیں نے کہا کہ ”علیحدہ گورکھا لینڈ پر ہمارا موقف واضح اور صاف ہے۔اب ممتا بنرجی کو دارجلنگ میں امن کے قیام پر اپنی ذمہ داری متعلق وضاحت پیش کرنی چاہیے“۔ ب
ی جے پی کے وفد کے دورے سے قبل تشدد کے امکانات پر دلیپ گھوش نے کہا کہ سہ فریقی مذاکرات کے اعلان کے باعث حالات اب معمول پر ہیں۔بی جے پی ہی پہلی ایسی سیاسی جماعت ہے جو دارجلنگ کا دورہ کررہی ہے۔ اس سے قبل بنے تمانگ نے بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ و مرکزی و زیر ایس ایس اہلوالیہ اور ریاستی صدر دلیپ گھوش سے کہا کہ دارجلنگ کا دورہ کرنے سے قبل یہ واضح کرنا ہوگاکہ بی جے پی کا گورکھا لینڈ کے قیام سے متعلق موقف کیا ہے۔اس کے بعد ہی انہیں دارجلنگ کا دورہ کرنا چاہیے۔ورنہ انہیں احتجاج کا سامنا کرنے کیلئے تیار رہنا چاہیے۔تمانگ نے کہا کہ گزشتہ تین مہینوں کے دوران جب دارجلنگ کے عوام علیحدہ ریاست کے قیام کیلئے ہڑتال کررہے تھے اس وقت دارجلنگ سے بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ نے ایک لفظ بھی نہیں کہااور نہ ہی مسئلہ حل کرنے کی کوشش کی۔
.بی جے پی کے صدر امیت شاہ بنگال دورے کے دوران دارجلنگ نہیں آنا چاہتے ہیں۔تمانگ نے کہا کہ ایس اہلوالیہ نے جنہوں نے 2014میں دارجلنگ کے عوام کی حمایت سے انتخاب میں کامیابی حاصل کی تھی ، دارجلنگ کے عوام کو مصیبت کے وقت میں تنہا چھوڑ دیا اور اب وہ دورہ کرررہے ہیں۔ خیال رہے کہ گورکھا جن مکتی مورچہ کاباغی گروپ ہی نہیں بلکہ گورکھا نیشنل لبریشن فرنٹ بھی،جس نے سب سے پہلے ہڑتال کے دوران ریاستی حکومت سے بات چیت کیلئے پہل کی تھی، علیحدہ ریاست کی تشکیل کامطالبہ تیز کردیا ہے۔ 16اکتوبر کو تیسرے راؤنڈ کی میٹنگ ہونے والی ہے۔ گورکھا نیشنل لبریشن فرنٹ کے جنرل سیکریٹری مہندرا چھتری نے کہاکہ ”ریاستی حکومت کے ساتھ پہلے دو دور کی میٹنگ کے دوران جی ٹی اے کا ایشو نہیں اٹھا تھا۔
انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت نے اشارہ دیا تھا کہ وہ گورکھا مسئلے کا مستقل حل چاہتی ہے۔اس لیے ہم دیکھنا چاہتے ہیں کہ تیسری میٹنگ میں کیا ہوتا ہے۔اس کے بعد ہی ہماری پارٹی مستقبل کے لئے لائحہ عمل مرتب کرے گی۔اس کے علاوہ جی این ایل ایف نے ریاستی حکومت پر سہ فریقی میٹنگ کیلئے دباو ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے چھتری نے کہا کہ دارجلنگ میں تین مہینے تک ہڑتال اور بند رہا۔احتجاج کے دوران 11افرادکی موت ہوگئی مگرکچھ بھی حاصل نہیں ہوا۔یہ احتجاج نہ بمل گورنگ کیلئے تھا اور نہ ہی بنے تمانگ کیلئے اور نہ ہی جی ٹی اے کیلئے بلکہ گورکھا عوام کیلئے احتجاج کیا گیا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: West bengal bjp chief shown black flags in kalimpong over neglect of hilly region in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply