بی ایس ایف اہلکار کی کھانا نہ دینے کے شکوے کے ساتھ سوشل میڈیا پر ویڈیو ، تحقیقات کا حکم جاری

نئی دہلی:بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کے ڈائریکٹر جنرل کے کے شرما نے سرحد پر تعینات جوانوں کو ناقص کھانا دیئے جانے کے حوالے سے ایک بی ایس ایف جوان تیج بہادر یادوکے الزام کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اس کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ فورس کے اہلکار نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو جاری کرکے الزام لگایا تھا کہ سرحد پر تعینات جوانوں کو انتہائی ناقص کھانا دیا جاتا ہے۔
اس جوان نے ویڈیو میں کہا ہے کہ جوانوں کے راشن کو بازار میں فروخت کر دیاجاتا ہے اور اس کے لئے حکومت کے بجائے فورس کے افسر ذمہ دار ہیں۔ جوان نے یہ بھی کہا کہ انہیں ناشتہ میںایک پراٹھا اور ایک مگ چائے تھما دی جاتی ہے اور 11گھنٹے کی ڈیوٹی دینا شروع کر دیتے ہیں اوور کئی بار تو پوری ڈیوٹی کھڑا رہنا پڑتا ہے۔ دوپہر کے کھانے میں دال کے نام پر ہلدی اور نمک کا پانی ہی ملتا ہے۔اور کبھی کبھی تو سب جوانوں کو خالی پیٹ ہی سونا پڑتا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی اس معاملے میں مداخلت کرنے کی درخواست کی تھی۔
فورس کے ڈائریکٹر جنرل نے آج ایک ٹیلی ویژن چینل سے بات چیت میں کہا کہ یہ اس اہلکار کا مسئلہ ہو سکتا ہے اور اگر اس کے الزامات صحیح پائے جاتے ہیں تو اس معاملے میں کارروائی کی جائے گی۔ اس جوان کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے داخلہ سکریٹری سے اس معاملے میں بی ایس ایف سے رپورٹ طلب کرنے اور ضروری کارروائی کو کہا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: We go to sleep on empty stomach bsf jawan posts video of food in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply