اشیائے خورد و نوش کی شدید قلت تیسری جنگ عظیم کا باعث بن سکتی ہے:آسٹریائی پروفیسر

نئی دہلی: دن بدن بڑھتی ماحولیاتی آلودگی اور محدود ہوتے توانائی کے وسائل سے اس بات کا خدشہ بڑھ گیا ہے کہ اگر تیسری جنگ عظیم ہوگی تو وہ پانی ،غذائی اجناس یا توانائی کے کم ہوتے وسائل پر ہو سکتی ہے۔یہ جامعہ ملیہ اسلامیہ میں منعقدہ توانائی الکٹرفانکس اور قابل تجدید توانائی کے ذرائع پرچھہ روزہ ورکشاپ کے پہلے دن آسٹریا کے وکٹوریونیونیورسٹی کے پرو فیسر اختر کلام نے کہی۔ انہوں نے خبردار کیاکہ اگر پانی، غذائی اجناس اور توانائی کی کمی کے مسئلے کو وقت رہتے حل نہیں کیا گیا توان تینوں میں سے کسی بھی معاملے پر تیسری عالمی جنگ چھڑ سکتی ہے۔ انہوں نے طلبا ء سے کہا کہ وہ دوسروں کے سہارے کی عادت چھو ڑ دیں اور خود چیزوں کو تلاش کرنا شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ کاپی پیسٹ اور گھسی پٹی عادت کو ترک کر دیں اور نئے خیال اور چیزوں کی تلاش کریں۔ انہوں نے کہایہاں سے اٹھا کر وہاں چسپاں کر دینا کوئی علم نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ انجینیئرنگ کی تعلیم محض نصابی کتابوں اور تھیوری سے نہیں دی جا سکتی بلکہ اس میں نئے نئے تجربات کی بھی ضرورت ہوتی ہے جو آپ کے کام میں پائداری پیدا کرتی ہے۔ واضح رہے کہ پرو فیسر اختر کلام 1985 سے وکٹوریہ یونیورسٹی میں مدرس ہیں۔ فی الحال وہ وہاں انجنئرنگ شعبہ کے سربراہ ہیں۔ وہ سڈنی کے نو جبکہ ساؤتھ ویلز یونونرسٹی اور ملیشیا کے پانچ دانش گاہوں میں متعدد عہدوں پر فائز رہ چکے ہیں۔
اس کے علاوہ وہ دنیا کے آٹھ یونیورسٹیوں کے ویزٹنگ پروفسر بھی ہیں۔.قبل ازیں جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلر پروفسرو طلعت احمد نے ان کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ پروفیسرکلام معروف سائنسداں ہیں اور جامعہ کے طلباء کو ان کے علم اور تجربات سے فائدہ اٹھانا چاہئے۔انہوں نے جامعہ ملیہ اسلامیہ اورگیان کی جانب سے منعقدہ اس کورس میں ا توانائی کے محدود ذرائع کے پیش نظر مستقبل میں توانائی کی کمی کے خطرے کو دیکھتے ہوئے نئی اختراعات پر غور و خوض ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ جامعہ ملیہ اسلامیہ کی کوشش رہی ہے کہ قوم کی تعمیر میں جامعہ کا کردار اہم ہو اور یہ پہل اسی سلسلے کی کڑی ہے اور جامعہ میں طلبہ کی صلاحیت نکھارنے کے لئے اس سلسلے میں مزید پہل کی جائے گی۔ مذکورہ کورس کے کوآرڈینیٹر پروفسر احتشام الحق نے کہا کہ گیان کے کورسو ں سے طلبا ء کو بہت فائدہ ہو رہا ہے اور اس کی وجہ سے انھیں ملک و بیرون ملک کے ماہر اورتجربہ کار اہل علم سے استفادہ کا موقع مل رہا ہے۔ پروفیسر احتشام نے بتایا کہ اس کورس میں ستر لوگوں نے رجسٹریشن کرایا ہے۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے علاوہ جموں کشمیر ، اتراکھنڈ ،بہار ، اتر پردیش ، کرناٹک ، دہلی کے طلباء نے اس کورس کے لئے رجسٹریشن کرایا ہے۔ مصر اور یمن سے بھی دو دو طلباءنے رجسٹریشن کرایا ہے۔ اس کورس میں کورس میں صرف طلباء ہی نہیں بلکہ سرمایہ کار ، ٹیچر اور دیگر طبقہ جات سے تعلق رکھنے والے شائقین نے بھی رجسٹریشن کرایا ہے۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ میں گیان کے کوآرڈینیٹر اور باؤر سائنس کے سربراہ امان جیراج پوری نے بتایا کہ گیان کا فائدہ اٹھانے مں ہ جامعہ ملیہ دوسرے نمبر پر ہے۔ اس کے تحت اب تک سترہ کورسیز منعقد ہو چکے ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Water and power resources shortages could be the cause of third world war in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply