نائب صدر جمہوریہ نے چیف جسٹس کے خلاف مواخذہ کا نوٹس مسترد کر دیا

نئی دہلی: نائب صدر جمہوریہ وینکیا نائیڈو نے ہندوستان کے چیف جسٹس دیپک مشرا کے خلاف کانگریس قیادت والی حزب اختلاف کی جانب سے دیا گیا تحریک مواخذہ کا نوٹس پیر کے روز مسترد کر دیا۔ہندوستان کی تاریخ میں کسی چیف جسٹس آف انڈیا کے مواخذہ کے لیے نوٹس دیے جانے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔ابتدا میں اس نوٹس پر71ممبران پارلیمنٹ نے دستخط کیے تھے لیکن7اراکین پارلیماں کے سبکدوش ہوجانے کے باعث یہ رتعداد کم ہو کر 64رہ گئی تھی۔یہ نوٹس سی بی آئی جج بی ایچ لویا کی موت کے حوالے سے ایک مقدمہ میں سپریم کورٹ کی رولنگ کے ایک روز بعد دیا گیا تھا۔ چیف جسٹس کےخلاف مواخذہ کی کارروائی کے لیے دیے گئے نوٹس پر سات سیاسی پارٹیوں کانگریس ،نیشنل کانگریس پارٹی (این سی پی)، سی پی ایم، سی پی آئی، سماج وادی پارٹی ، بی ایس پی اور مسلم لیگ کے ممبران پارلیمنٹ نے دستخط کیے تھے۔نوٹس دینے کے بعدسینیئر کانگریس لیڈر کپل سبل نے کہا تھاکہ جب سے چیف جسٹس آف انڈیا نے عہدہ سنبھالا ہے ان کے کام کاج کرنے کے ڈھنگ پراعتراض کیا جاتا رہا ہے اور 12جنوری کو سپریم کورٹ کے چار سینیئر ججوں کی ایک پریس کانفرنس میں اس کا ثبوت بھی مل گیا ۔سبل نے کہا کہ جب خود سپریم کورٹ کے جج ججزکا چیف جسٹس کے کام کرنے کے طور طریقوں کے حوالے سے کہنا ہے کہ عدلیہ کی آزادی خطرے میں ہے تو کیا پھر بھی ملک و قوم مٹی کا مادھو بنی رہے اور کچھ نہ کرے۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ جتنے لیڈروں نے دستخط کیے ہیں ان کا یہ کہنا ہے کہ جمہوریت خطرے میں ہے۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس نوٹس پر مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ اور ترنمول کانگریس کی صربراہ ممتا بنرجی یا ان کے کسی نمائندے اور راشٹریہ جنتا دل کے سربراہ لالو پرساد یادو یا ان کے کسی نمائندے نے دستخط نہیں کیے تھے اور نہ ہی انہوں نے یا ان کے کسی نمائندے نے اس حوالے سے ہونے والی میٹنگ میں حصہ لیا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Vp venkaiah naidu rejects impeachment motion against cji misra in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply