اتراکھنڈ اسمبلی میں وزیر اعلیٰ ہریش راوت10مئی کو اکثریت ثابت کریں گے

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ کانگریس کے ہریش راوت منگل کے روز اترا کھنڈ اسمبلی میں اپنی پارٹی کی اکثریت ثابت کریں۔عدالت عظمیٰ نے اتراکھنڈ میں صدر راج کی منسوخی کے نینی تال ہائی کورٹ کے فیصلہ کے خلاف مرکزی حکومت کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے مزید کہا کہ صدرراج کے نفاذ سے پہلے اسپیکر نے جن 9منحرف کانگریسی ممبران اسمبلی کو ناہل قرار دیا تھا وہ ووٹ نہیں دے سکتے۔
عدالت عظمیٰ اپنے مقرر کردہ مشاہدین کی نگرانی میں ووٹنگ کرائے گی اور پوری کارروائی کی ویڈیو ریکاڈنگ کی جائے گی۔ہریش راوت نے کہا تھا کہ کانگریس کی 70رکنی اسمبلی میں اکثریت برقرار ہے اور انہیں اسے ثابت کرنے کا موقع دیا جانا چاہئے۔جبکہ بی جے پی قیادت والی مرزی حکومت نے کہا تھا کہ راوت حکومت اس وقت اقلیت میں آگئی جب 9کانگریسی ممبران نے ان کی حکومت کے پیش کردہ سالانہ بجٹ کے خلاف ووٹ دیا۔مرکز نے گورنر کے کے پال کے توسط سے ریاست کے اختیارات اپنے ہاتھ میں لینے کے اہم اسباب میں سے ایک سبب اسے بھی بتایا۔
اتراکھنڈ کو اپنی لپیٹ میں لینے والے آئینی بحران کے مزید ثبوتوں میں سے ایک ثبوت مرکز نے وہ ویڈیو دکھا کر پیش کیا جس میں مسٹر راوت کو کانگریس کے منحرف ممبران اسمبلی کو رشوت دیتے دکھایا گیا ہے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ 10مئی کو صبح 11بجے خصوصی اجلاس بلایا جائے اور اکثریت ثابت کرنے کے لیے ووٹنگ کے دوران دو گھنٹے کے لیے صدر راج اٹھا لیا جائے گا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Uttarakhand floor test on tuesday 9 disqualified mlas cant vote in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply