فرضی تصادم میں10 سکھ زائرین کو ہلاک کرنے کے مجر م قرار دیے گئے27پولس اہلکار روپوش

لکھنؤ: 25سال قبل اترپردیش کے شہر پیلی بھیت میں11سکھ زائرین کو دہشت گرد قرار دے کر انہیں فرضی تصادم میں ہلاک کرنے کے معاملہ میں مجرم قرار دیے گئے 47میں سے27پولس اہلکار روپوش ہو گئے ہیں۔
ان47مجر پولس اہلکاروں کو لکھنؤ میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت سزائے موت سنانے والی تھی۔سی بی آئی نے دوران تحقیقات یہ پایا کہ12جولائی1991 کویہ سکھ زائرین پٹنہ صاحب میں متھہ ٹیک کر واپس آرہے تھے کہ پولس والوں نے انہیں زبردست بس میں سے اتار لیا اور انہیں دہشت گرد بتاکر ان کافرضی انکاؤنٹر کر کے انہیں ہلاک کر دیا ۔ جبکہ وہ بے قصور تھے۔ اور ان کا دہشت گردی سے دور کا بھی واسطہ نہیں تھا
۔ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ پولس اہلکار جوابھی ملازمتوں پر تھے طویل رخصت لے کر غائب ہو گئے اور جو ریٹائر ہو چکے ہیں وہ روپوش ہو گئے۔خصوصی عدالت نے ان سب کے خلاف غیر ضمانتی وارنٹ جاری کر رکھے ہیں۔ ان سب کےخلاف آج (پیر) سزا کا تعین کیا جانا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Twenty seven convicted up cops go missing in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply