کرناٹک کے ایک اسپتال میں ڈاکٹر اور پولس پر خواجہ سراؤں کاحملہ ، 2گرفتار

دیون گیرے:ایک حیران کن واقعہ میں کرناٹک کے دیون گیرےکے ضلع اسپتال میں زنخوں کے ایک گروپ نے ڈیوٹی ڈاکٹر سے بحث و تکرار کے بعد ہنگامہ آرائی کی۔ دو خواجہ سرا جن کی شناخت عرفان اور سبحان کے طور پر کی گئی ہے ‘ کو ڈاکٹرس اور پولیس پر حملے کے سلسلہ میں گرفتار کرلیا گیا۔
بتایا جاتا ہے کہ یہ خواجہ سرا اپنے ایک ساتھی کو علاج کے لئے اسپتال لائے تھے جس کے بعد ان کا جھگڑا ششی دھر نامی ڈیوٹی ڈاکٹر سے ہوگیا۔ .جب پولیس نے مداخلت کی تو ان خواجہ سراؤں نے ان کی لاٹھیاں چھین لیں اور کانسٹبل ناگا راجو پر حملہ کردیا جو اس معاملہ میں زخمی ہوگیا۔
اس جھگڑے کے دوران ایک خواجہ سرا نے ڈاکٹرس کے سامنے اپنے کپڑے اتارنے شروع کردیئے جس سے اسپتال کے احاطہ میں بے چینی پھیل گئی۔ اس واقعہ میں اسپتال کے بیشتر آلات کو بھی نقصان پہنچا۔ سپرنٹنڈنٹ پولیس ڈاکٹر بھیم شنکر گولیدہ اور چگتیری ڈسٹرکٹ اسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ نیلم بائیک مقام واقعہ پہنچے۔
اسپتال کے اسٹاف نے پولیس تحفظ اور ڈاکٹر پر حملہ ‘ فرائض کی انجام دہی سے سرکاری افسروں کو روکنے پر مشتبہ افراد کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ اس سلسلہ میں پولیس نے ایک معاملہ درج کرلیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Transgenders held for assaulting doctor constable in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply