کرنسی منسوخی معاملے پر ترنمول کانگریس کا احتجاج جاری،راجیہ سبھا سے واک آؤٹ

نئی دہلی: ترنمول کانگریس نے ہزار اور پانچ سو روپے کے نوٹ کو غیر مروج کرنے کے حوالے سے حکومت پر انتقامی کارروائی کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج راجیہ سبھا سے واک آؤٹ کیا۔ ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے آج صبح ضروری قانون سازی کے کام کاج نمٹانے کے بعد وقفہ صفر کی کارروائی شروع کرنے کے لئے جیسے ہی متعلقہ رکن کا نام پکارا تو ترنمول کانگریس کے ڈیریک او برائن اپنی سیٹ پر کھڑے ہو گئے اور کہا کہ نوٹ بندی کے معاملے پر ایوان میں بحث کی گئی ہے اور تمام حزب اختلاف اس معاملے میں متحد ہے۔
نوٹ بندی سے لوگوں کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا رہا ہے اور تقریباً 135 اموات بھی ہوچکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ترنمول کانگریس نے لوگوں کی پریشانیوں کو زور و شور سے اٹھایا ہے اور حکومت کی سخت نکتہ چینی کی ہے ، اسی لئے مودی حکومت ترنمول کانگریس کے لیڈروں کو جیل میں بند کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سیاسی انتقام کے جذبے سے کام کر رہی ہے اور اسے برداشت نہیں کیا جائے گا۔ حکومت کو اپنا رویہ تبدیل کرنا چاہئے۔ انہوں نے اس معاملے پر بحث کرانے کا بھی مطالبہ کیا۔
دریں اثناء کانگریس کے آنند شرما نے اس معاملے پر بولنا چاہا لیکن مسٹر کورین نے انہیں اجازت نہیں دی۔ اس کے بعد ترنمول کانگریس سکھیندو شیکھر رائے بھی بولنے کے لئے کھڑے ہو گئے لیکن انہیں بھی اجازت نہیں دی گئی۔ اس پر مسٹر رائے واک آؤٹ کا اعلان کرتے ہوئے اپنی پارٹی کے تمام ارکان کے ساتھ ایوان سے باہر چلے گئے۔ انہوں نے ‘مودی کی آمریت نہیں چلے گی’ کے نعرے بھی لگائے۔

Title: tmc walk out of rajya sabha over demonetisation | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply