ممبئی بم دھماکے کیس میں تین کو عمر اورباقیوں کو دو تا دس سال کی قید

ممبئی: یہاں کی ایک خصوصی پوٹاعدالت نے دسمبر 2002اور مارچ2003کے درمیان کئی بم دھماکے کرنے کے مجرم قرار دیے گئے دس میں سے تین کو عمر قید کی سزا سنائی اور باقی سات کودو سے دس سال تک کی سزا سنائی گئی ہے۔
اسپیشل پوٹا جج پی آر دیشمکھ نے کہا کہ مجرم مزمل انصاری (جس نے بم رکھے تھے) آخری سانس تک عمرقید گذارے گا۔ عمر قید کی سزا پانے والے دیگر دو فرحان کھوٹ اور ڈاکٹر واحد انصاری ہیں۔ عدالت نے حکم دیا کہ مجرموں سے وصول کیا جانے والا9لاکھ روپے جرمانہ کا 75فیصدحصہ ڈسٹرکٹ لیگل سروس اتھارٹی کو اور باقی انڈین ریلوزی کو دیا جائے گا۔عدالت نے ڈسٹرکٹ لیگل سروس اتھارٹی کو یہ ہدایت بھی کی کہ متاثرین اور ہلاک شدگان کے لواحقین کو معاوضہ کی رقم کا فیصلہ کرے اور اسی کے مطابق اس کی ادائیگی کرے۔
اس سے قبل29مارچ کو عدالت نے اس مقدمہ میں کلیدی ملزم ثاقب نچن، عطیف ملا، حسیب ملا، غلام کوتال، محمد کامل، نور ملک، انور علی خان ، فرحان کھوٹ، ڈاکٹر واحد انصاری اور مزمل انصاری کو قصور وار قرار دیا تھا۔13مارچ2013کو ہونے والے ملند ٹرین دھماکوں میں12افرادہلاک اور اس سے پہلے 6دسمبر 2002کو ممبئی سینٹرل اسٹیشن کے میک ڈونالڈ میں ہوئے دھماکہ میں متعدد زخمی اور 27جنوری2003کو ولے پارلے (ایسٹ) میں ایک مارکیٹ میں ہوئے دھماکہ میں ایک شخص ہلاک ہو گیا تھا۔

Title: three sentenced to life in 2002 03 mumbai blasts case | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply