دہلی کے رام لیلا میدان میں تین طلاق بل کے خلاف خواتین کا زبردست مظاہرہ

نئی دہلی: حال ہی میں لوک سبھا میں منظور کیے جانے والے طلاق ثلاثہ بل 2017کے خلاف آواز بلند اور اسے پہلی فرصت میں واپس لے لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے دہلی کے تاریخی رام لیلا میدان میں مسلم خواتین نے زبردست مظاہرہ کیا۔
ہر شعبہ حیات سے تعلق رکھنے والی برقعہ میں ملبوس دہلی اور مضافات کی لاتعداد خواتین نے کھلے میدان میں چلچلاتی دھوپ کا ڈٹ کر مقابلہ کرتے ہوئے خاموش احتجاج کیا۔
اس زبردست ریلی میںخواتین ”طلاق بل واپس لو“ ” طلاق مخالف بل ہمیں منظور نہیں“،”تین طلاق بل مسلم عورتوں کے حقوق کے خلاف ہے“”ٹریپل طلاق بل: اینٹی سوشل، اینٹی چلڈرن اور اینٹی ویمن “ کے عنوان کے ساتھ تختیاں بلند کیے خاموش کھڑی اور بیٹھی تھیں۔ان عورتوں کا کہنا تھا کہ تین طلاق بل شرعی قوانین پر حملہ ہے اور مسلم خواتین کے خلاف دانستہ طور پر کیاگیا اقدام ہے۔
مظاہرے میں شامل ایک خاتون عظمیٰ نسرین نے کہا کہ سپریم کورٹ جب تین طلاق کو غیر قانونی قرا دے چکی ہے تو اسے جرم قرا ردینے کی کیا ضرورت تھی۔
یہ سوچنے کی بات ہے کہ اگر تین طلاق دینے والے کسی شخص کو سزا سناکر اسے تین سال کے لیے جیل میں ڈال دیا جاتا ہے تو اس کے غائبانہ میں اس کے کنبہ کی کون دیکھ بھال کرے گا کون ان کے نان نفقہ کا بندوبست کرے گا۔رام لیلا میدان میں مسلم خواتین کی اتنی کثیر تعداد تھی کہ پورا رام لیلا میدان ٹھاٹھیں مارتا سیاہ سمندر کا منظر پیش کر رہا تھا۔۔
واضح رہے کہ مرکزی حکومت نے جب سے پارلیمنٹ میں تین طلاق بل پیش کیا ہے مسلم تنظیمیں اور خواتین ملک گیر پیمانے پر ریلیاں اور جلسے کر رہی ہیں۔2اپریل کو ممبئی کے آزاد میدان میں بھی خواتین کی زبردست ریلی ہو چکی ہے۔

Title: thousands of muslim women protest against triple talaq bill | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply