دہلی میں فضائی آلودگی کے حوالے سے بیداری لانے کے لیے مصنوعی پھیپڑے نصب کردیے گئے

نئی دہلی: گذشتہ کچھ روز سے دہلی کی ہوا میں آلودگی خطرناک حد تک بڑھ گئی ہے ۔ دہلی کس خطرناک حد تک آلودہ ہے اس کا اندازہ لگانے کے لیے ہیلتھ دہلی بریدھ نام کی لنگ کئیر فاؤنڈیشن اور سر گنگا رام ہاسپٹل نے دو مصنوعی پھیپھڑے لٹکا رکھے ہیں۔

یہ پھپھڑے اس لیے لٹکائے گئے ہیں تاکہ لوگوں میں فضائی آلودگی کے حوالے سے بیداری آئے اور انہیں معلوم بھی ہو سکے کہ دہلی میں رہنے والوں کے پھیپھڑے کتنے متاثر ہو رہے ہیں۔یہ پھیپھڑے فیس ماسک میں استعمال کیے جانے والے ہیپافلٹرز جیسے ہیں ۔

ان کے اندر ہوا کھینچنے کے کے لیے پنکھے نصب کیے گئے ہیں اور وہ انسانی پھپھڑوں کی نقل کرتے ہیں۔ اسی قسم کے مصنوعی پھیپھڑے فروری2018میں بنگلور میں نصب کیے گئے تھے۔جس میں تیسرے دن تک یہ بھورے ہوگئے اور تین ہفتے بعد بالکل سیاہ پڑ گئے۔

واضح ہو کہ آج دہلی دنیا کے20 آلودہ ترین شہروں میں سے ایک ہے ۔جہاں فضائی آلودگیکے باعث سالانہ30ہزار لوگ مرجاتے ہیں۔آلودہ فضا میں سانس لینے سے دنیا بھر میں ہر سال7ملین افراد ہلاک اور ایک ارب سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: These faux lungs will show you effects of pollution on your lungs in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.