سابق وزیر مملکت خارجہ تھرور کی مودی حکومت سے روہنگیا مسلمانوں کو پناہ دینے کے لیے قانون بنانے کی اپیل

نئی دہلی: (یو این آئی) میانمار کے روہنگیا مسلمانوں کو غیر قانونی تارکین وطن اور سلامتی کے لئے خطرہ تسلیم کرنے کے مرکز کے رویے کو مسترد کرتے ہوئے سینئر کانگریسی لیڈر اور سابق وزیر مملکت خارجہ ششی تھرور نے مرکز کی نریندر مودی حکومت سے انہیں پناہ دینے کے لئے قانون بنانے کی اپیل کی۔
مسٹر تھرور نے یواین آئی سے بات کرتے ہوئے کہا ”ہندوستان کا ہزاروں برسوں کی تاریخ ہے کہ جس نے بھی یہاں آکر پناہ مانگی اس کو پناہ دی گئی اور مرکزی حکومت کو اس ترغیب سے بھاگنا نہیں چاہئے“۔ قابل غور ہے کہ یہ معاملہ سپریم کورٹ پہنچ چکا ہے اور عدالت عظمی میں داخل حلف نامے میں مرکزی حکومت نے صاف کہا ہے کہ روہنگیا مسلمان غیر قانونی تارکین وطن ہیں۔انہوں نے کہا ”جب ہندوستان میں ایسا کوئی قانون ہی نہیں ہے جو یہ طے کرے کہ کون پناہ گزین ہے اور کون پناہ گزین نہیں ہے تو آپ کس بنیاد پر کہہ سکتے ہیں کہ میانمار سے آنے والے روہنگیا مسلمانوں کو پناہ گزین کی حیثیت نہیں دی جا سکتی ہے، محض اس لئے کہ انہوں نے مناسب طریقہ کار پر عمل نہیں کیا“۔
.مسٹر تھرور نے کہا کہ یہ مناسب وقت ہے جب ہندوستان پناہ گزینوں کے معاملات میں قانون سازی کے ذریعہ ان کے حقوق اور ذمہ داریوں کا تعین کرے اور قانونی طور پر پناہ لینے کے خواہشمند افراد کے سلسلے میں ایک قانونی میکنزم طے کیا جانا چاہئے۔انہوں نے اس بات کو بھی مسترد کر دیا کہ زیادہ تر روہنگیا سیکورٹی کے لئے خطرہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ، “ان میں سے اکثر لوگ غریب خواتین اور بچے ہیں جو اپنا گھربار چھوڑ کر اپنی زندگیوں کو بچانے کے لئے بھاگ دوڑ کر رہے ہیں ،وہ دہشت گرد کیسے ہوسکتے ہیں؟ ایسا کہہ کر اس مسئلہ کو حل نہیں کرسکتے ، بلکہ ان میں ایسے عناصر کی نشاندہی کی جانی چاہئے جوروہنگیا کی آبادی میں اپنا اثرورسوخ رکھتے ہیں اور انہیں گمراہ کر نے کی کوشش کر سکتے ہیں اور یہ کام تحقیقاتی ایجنسیوں کا ہے۔ہر شخص کے لئے قومی سلامتی کا معاملہ انتہائی اہم ہے لیکن سیکورٹی ایجنسیوں کا یہ فرض ہے کہ وہ یہ پتہ لگائیں کہ سیکورٹی کے لئے کون سے عناصر خطرہ بن سکتے ہیں۔
ڈاکٹر تھرور نے کہا کہ پناہ گزینوں کے معاملے میں انہوں نے ایک ذاتی بل کے ذریعہ اس مسئلے کو حل کرنے کی کوشش کی تھی لیکن مرکزی حکومت نے اس پر کوئی نوٹس نہیں لیا۔ انہوں نے کہا، ”کسی بھی صورت حال کا سامنا کرنے کے لئے مرکزی حکومت کئی نکات پر غور کر تی ہے۔ کسی معاملے میں ملک میں کوئی قانون یا پالیسی نہیں ہو تو مواقع کے پیش نظر ہی ایسی پالیسیاں بناتی ہیں جو ان کے موافق ہوں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Tharoor says govt reasoning for denying refuge to rohingyas is unacceptable in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply