سخت حفاظتی بندوبست میں اتر پردیش میں تعزیوں کی تدفین

لکھنؤ: پیغمبر حضرت محمد کے نواسے امام حسین کی شہادت کی یاد میں آج محرم دارالحکومت لکھنؤ سمیت پورے اترپردیش میں غمگین ماحول میں منایا گیا۔ گورکھپور، دیوریا، اعظم گڑھ، کانپور، بستی، وارانسی اور آگرہ سمیت ریاست کے زیادہ تر علاقوں میں ماتمی جلوس نکال کر تعزیئے دفن کئے گئے۔ اس دوران ہوئے حادثوں میں دو لوگوں کی موت ہوئی جبکہ 15 دیگر شدید زخمی ہو گئے۔
اس دوران بریلی، پیلی بھیت، مؤ اور پرتاپ گڑھ میں تشدد کی اکا دکا واقعات میں تقریباً نو افراد زخمی ہو ئے۔ متاثرہ علاقوں میں کشیدگی کے پیش نظر احتیاط کے طور پر پولیس فورس تعینات کی گئی ہے۔ بریلی کے نواب گنج میں پتھر اؤ کے دوران پانچ افراد زخمی ہو گئے۔ سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ آر کے بھاردواج نے بتایا کہ جلوس کے دوران دو فرقوں کے درمیان ہوئے پتھراؤ میں زخمی افراد کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے تاہم انہوں فائرنگ کے واقعہ سے انکار کیا ہے۔
لکھنؤ میں محرم کا جلوس صبح تقریباً 10 بجے سے بڑےامام باڑے سے شروع ہوا اور آٹھ کلومیٹر دور تال کٹورا پر ختم ہوا۔ اس دوران ماتم کے ساتھ امام حسین کی شہادت کا مقصد بیان کیاگیا۔ جونپور میں محرم کی 10 ویں تاریخ یعنی یوم عاشورہ پر امام چوک اور امام باڑے میں رکھے گئے تعزیوں کو صدر امام باڑا بیگم گنج کربلا میں غمگین ماحول میں دفن کیا گیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Taaziye buried in sad atmosphere in uttar pardesh in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply